وصالِ یار (افسانہ) محمد اویس حیدر

فیضی اس کائنات میں رہتے ہوئے دراصل کسی اور ہی کائنات کا باسی تھا۔ جب رات کی کالی چادر دن کی روشنی کو اپنے اندر جذب کر کے پھیل جاتی تو فیضی کی آنکھیں کسی چراغ کی مانند سلگنے لگتیں۔ پھر ان چراغوں کی روشنی میں وہ اپنی اس کائنات میں جا پہنچتا جہاں کا وہ باسی تھا۔ کوئی نہیں جانتا تھا کہ دن میں سوٹڈ بوٹڈ...