سراب کی مانند - رضوانہ زین

سولی پر لٹکی ہوئی ایک لاش کی مانند بھٹکی ہوئی کوئی روح ہو سراب کی مانند سر پر گناہوں کا بوجھ لیے گھوم رہے ہیں خود اپنے خریدے ہوئے عذاب کی مانند ریت کے گھروندے جو تا عمر سنوارے پت جھڑ میں گر گئے اک شاخ کی مانند وہ مجھ کو در غیر پہ یوں چھوڑ گیا ہے خیرات میں پھینکی ہوئی سوغات کی مانند ہر لحظہ تیری یاد...

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */