قلم کی امامت - صائمہ نسیم بانو

مرمری سے دودھیا جبہ و سیہ عمامہ میں مستور وہ نوجوان کسی عمیق فکر کے زیرِ اثر ماحول پہ تنے سکوت کا اک ساکن حصہ محسوس ہوتا تھا۔ کنپٹی پہ رگیں سوچ کی پکی گانٹھ سے بندھ رکھی تھیں، دندان تلے دبے دندان جبڑوں کے ابھاروں کو کسی مصور کی کھنچی لکیروں کیطرح واضح کیے دیتے اور بھینچی ہوئی مٹھیاں اپنا ہی کلیجہ...