کامیاب بغاوت – ریاض علی خٹک

وہ ایک 65 سالہ بزرگ تھا. معمولی پینشن پر جینے والا ایک چھوٹے سے گھر میں موت کا انتظار کرتے جی رہا تھا. اُس کی کُل متاع ایک پرانی گاڑی تھی. عام دُنیاوی قاعدے پر وہ اپنی زندگی جی چکا تھا، اب وہ معاشرے کا عضو معطل تھا. وہ فرد جو اپنی کھڑکی سے زندگی کو بھاگتے دوڑتے بس دیکھتا ہے. ایک تماشائی کی طرح.

لیکن ایک صبح اُس نے معمول سے ہٹ کر سوچا، اُس نے بغاوت کردی. کیا ایسے ہی جینا ہے؟ یہ سوال بار بار اُس نے دہرایا، لیکن ساتھ ہی عقل نے آئینہ دکھایا. کہ ایسا نہیں جینا تو تم کر ہی کیا سکتے ہو؟ اس عمر میں اس غربت میں کیا ممکن ہے. اُس نے اپنی صلاحیتوں کا احتساب کیا کہ وہ کیا کرسکتا ہے. اچانک اسے یاد آیا کہ وہ مرغی عام مروج انداز سے ہٹ کر پکانے کا ایک طریقہ جانتا ہے. اس انداز میں جب بھی اس نے مرغی پکائی، اُس کے دوستوں نے تعریف کی.

وہ اپنا یہ نسخہ لے کر محتلف ہوٹلز اور ریسٹورنٹ گیا. اُس کی ڈیمانڈ بھی بہت سادہ تھی. فارمولا مفت، سیلز میں کمیشن. لیکن اس کے باوجود ہزار جگہ سے انکار ہوا. اُس نے ہمت نہ ہاری اور آخرکار ایک جگہ اُس کی شنوائی ہوگئی. اُس کے طریق کار کے مطابق مرغی نہ صرف بنی، بلکہ اس نے امریکیوں کے کھانے کا انداز ہی بدل ڈالا.

یہ 65 سالہ بزرگ کرنل ہارٹ لینڈ سینڈرز تھے، اور ان کا یہ فارمولا کینٹکی فرائڈ چکن یعنی کے ایف سی KFC کہلایا، جو آج امریکہ ہی نہیں دنیا بھر میں عام ہے. کرنل صاحب کی یہ محنت اور ان کی اپنی زندگی کی یکسانیت سے یہ بغاوت بہت کچھ سکھاتی ہے.

آج ہماری نوجوان نسل ہمت ہار لیتی ہے. تحقیق پر ایک وجہ ہی سامنے آتی ہے کہ کامیابی نہیں ملی. یہ کامیابی کسی لاٹری کا نام نہیں. دنیا کے کامیاب ترین افراد میں کسی جواری کا نام نہیں، کسی لاٹری اور انعامی بونڈ میں نمبر لگنے والے کا نام نہیں. یہ لسٹ ان سارے لوگوں کے ناموں سے سجی ہے جنہوں نے ان تھک محنت کی، جنہوں نے ہارنا نہیں سیکھا، جنہوں نے ناکامی پر بیٹھ جانا نہیں سیکھا. یہ اپنی دھن میں لگے رہتے ہیں. ہم ان کی اس محنت کے انعام گنتے ہیں. اس گنتی میں وہ مستقل مزاجی بھول جاتے ہیں.

آپ آج جہاں بھی ہوں. جیسے بھی ہوں، جس عمر میں بھی ہوں. اگر آپ اپنے آپ کو ناکام سمجھ چکے ہیں. اگر آپ مایوس بیٹھ چکے ہیں تو اپنے حالات سے آج بغاوت کرلیں. اس بغاوت کے بعد اپنی صلاحیتوں کے ہھتیار جانچ لیں. یاد رکھیں کہ کامیاب بغاوت کے لیے بہت زیادہ ہتھیار نہیں ضروری، بہت ساری ہمت اور مسقل مزاجی کی طلب ہوتی ہے. اس بغاوت کو ضد بنا لیں، اس ضد سے اپنی مسقل مزاجی کی طاقت لیں.

Comments

FB Login Required

ریاض علی خٹک

ریاض علی خٹک خیبر پختونخوا کے کوہساروں سے روزی روٹی کی مشقت پر سندھ کے میدانوں میں سرگرداں, تعلیم کیمسٹ کی ہے. تحریر دعوت ہے.

Protected by WP Anti Spam