دو اور دو چار پر کچھ سوچ بچار - فرح رضوان

وہ ایک ایسے علاقے کی رہنے والی تھی جہاں ہر طرف غربت کا راج تھا، پیٹ بھر کھانے کا ہی سوال نہ تھا، تو دعوتوں میں تین چار ڈشز کا تصور اول تو ان کے ہاں سرے سے ناپید تھا، دوسرا حرام ہی کے زمرے میں شمار کیا جاتا تھا. اس کی دادی بتاتی تھیں کہ یہ علاقہ ہمیشہ سے ایسا خشک سالی کا شکار نہ تھا، لوگوں کے پاس...

error: اس صفحے کو شیئر کیجیے!