تہ بند، تہمد اور تہمت - اطہر علی ہاشمی

محترم پروفیسر عنایت علی خان نے اپنے فکر انگیز مضمون ’’کل شب جہاں میں نکلا‘‘ (4 دسمبر) میں تہ بند یا تہمد کے لیے ’’تہمت‘‘ (بروزن زحمت، رحمت) استعمال کیا ہے۔ ایک بڑے بزرگ شاعر اور آفاقی ادیب نے ہم پر طنز کیا تھا کہ آپ کے مرشد سید مودودیؒ نے تہمد کو تہمت لکھا ہے۔ کاش ہمیں سید مودودیؒ کو مرشد بنانے...