وہ اپنے زمانے کا ارطغرل تھا - محمد حسان

اوکتائی خان کے جنگلوں ، صلیبیوں کے قلعوں اور فونیا ، اناطولیہ کے شہروں سے سلطان کے محلات تک ہر جگہ اس کی جرات اور بہادری کے چرچے ہیں ۔ ۔ قبیلوں کے سردار اس کی ذہانت اور بہادری کے معترف ہیں مگر اپنی سرداری کھونا بھی نہیں چاہتے ۔ ایسے میں حالات کی ستم ظریفی نے اسے تاریخ کے ایسے موڑ پر لا کھڑا کر دیتی...