گڑیا – شہاب رشید

تما م رات آنکھوں میں کاٹنے کے بعد وہ صبح سویرے بستر سے اٹھا منہ ہاتھ دھو کر گھر کے صحن کی ٹوٹی کرسی پر آن بیٹھااس کی بیوی جو اس کے پیچھے ہی چلی آئی تھی، نے چلاتی ہوئی آواز میں کہا کہ گھر میں کچھ کھانے کو نہیں ہے، راشن کئی دنوں سے مزید پڑھیں

جُتی قصوری – سائرہ ممتاز

زبیدہ خاتون اکیلی دکیلی چار کمروں کے گھر میں رہتی تھی، جس کا صحن سات آٹھ مرلے جتنا تو رہا ہوگا. بال سفید ہوئے بھی زمانے بیت چکے تھے، مگر مائی ہڈ کاٹھ کی تگڑی تھی. یہ سرو جتنا لمبا قد اور پھرتیلا جسم، مائی کہیں سے بھی سن رسیدہ نہیں لگتی تھی، لیکن اسے مزید پڑھیں

ہر لڑکی کسی آشنا کے ساتھ نہیں بھاگتی – محسن حدید

میرے سوال پر ایک بار اس کا سارا جسم ہل گیا، یوں جیسے اسے شدید جھٹکا لگا ہو، اس نے آنکھیں اٹھائیں، اب گھبرانے کی باری میری تھی، اتنی وحشت اور ویرانی۔ میں نے بےاختیار نگاہیں پھیر لیں، ان آنکھوں میں دیکھنا مشکل تھا. مجھے یاد آیا کہ بچپن میں ایک بار چڑیا گھر گئے مزید پڑھیں

ناگ سائیں (آخری قسط) – ریحان اصغر سید

‎ناگ سائیں کی آنکھیں بند تھیں اور پیشانی پر پیسنے کے قطرے چمک رہے تھے۔ وہ گرد و پیش سے مکمل بےنیاز نظر آتا تھا۔ اس سے چند فٹ دور کھڑے گن بردار پولیس والوں میں اتنی ہمت نہیں تھی کہ وہ اس کے ہاتھوں میں ہتھکڑی ڈال سکیں۔ اگر نوکری کی مجبوری نہ ہوتی مزید پڑھیں

ناگ سائیں (3) – ریحان اصغر سید

تیرو ہندو مذہب سے تعلق رکھنے والا خاندانی سپیرا تھا۔ وہ افسانوی شہرت کے حامل گاؤں لسبی کا رہنے والا تھا۔ گاؤں کی آبادی بمشکل چند سو نفوس پر مشتمل تھی، جو سب سپیرے تھے، لیکن انھیں گاؤں کی حدود میں سانپ پکڑنے کی اجازت نہیں تھی، کیونکہ گاؤں میں موجود ناگ داتا کے مندر مزید پڑھیں

ناگ سائیں (2) – ریحان اصغر سید

بابر علی ایک دبنگ صحافی تھا۔ اس نے اپنے کیرئیر کا آغاز ایک اخبار کے فیلڈ رپورٹر کے طور پر کیا۔ جلد ہی اس کی تحقیقاتی سٹوریز نے تہلکہ مچا دیا۔ اس نے کرپشن کے کئی بڑے سکینڈل بےنقاب کیے۔ اخبار میں کالم بھی لکھے اور پھر ایک نیوز چینل پر ایک سیاسی ٹاک شو مزید پڑھیں

جہنم کا منظرنامہ – محمد علی نقی

ہر طرف گہما گہمی کا عالم تھا کہ لوگ برہنہ بدن شرق و غرب میں دوڑے جا رہے تھے، کہیں سے آہ کی آواز بلند ہو رہی تھی تو کوئی واہ واہ کہہ کر مسلسل داد دیے جارہا تھا کہ اتنے میں جہنم کے دروغے کی آواز بلند ہوئی، یہ عیش و عشرت کا زمانہ مزید پڑھیں

شب کا مسافر – سخاوت حسین

شام کے سائے گہرے ہو چکے تھے۔ شفق پر سورج کی سرخ لکیر الوداع ہوتے مسافر کے آخری سلام کی طرح دور پردہ افق سے الوداعی سلام کہہ رہی تھی۔ لاہور کی سڑکوں پر اسی طرح گہما گہمی تھی۔ چنگ چی رکشے اپنے سفر پر رواں دواں تھے۔ بازاروں میں لوگوں کا ہجوم تھا۔ مجھے مزید پڑھیں

بریانی کی پلیٹ اور بچے کی فیس – سالک وٹو

میرا گاؤں شہر سے کوئی 15 کلو میٹر دوری پہ ہے۔ کل ساڑھے 9 بجے آنکھ کھلی تو بابا جی کا ایک حکم نامہ ملا جس کے تحت مجھے شہر جانا تھا۔ جلدی میں موٹرسائیکل اٹھائی اور چل نکلے۔ کام سے فراغت ہوئی تو سوچا کہ کیوں نہ واحد فوڈ ویلی سے بریانی کھائی جائے۔ مزید پڑھیں

دہشت گردی کیوں ختم نہیں ہوتی؟ محمد علی نقی

جنرل ضیاء الحق کے دور سے پاکستانی سیاست میں رجعت پسند عناصر کو خوب پذیرائی ملی اور حکومتی سرپرستی میں اسلامائزیشن کا احیاء ہوا جس میں خاص طور پر قانون اور دوسرے اسلامی امور کو اسلامی قوانین کے زیرِاثر لایا گیا۔ یہیں سے رجعت پسند عناصر کو خوب پھیلنے پھولنے کا موقع ملا جنھوں نے مزید پڑھیں