’’ازالہ کون کرے گا۔۔۔‘‘ - احسان کوہاٹی

اس نے بس دو لفط کہے اور اس کے بعد اس کی سسکیوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع ہو گیا، وہ بس روئے جا رہی تھی۔ اور سیلانی اسے چپ کرانے کی ناکام کوشش کر رہا تھا۔ آخر کار وہ خود ہی ہار کر چپ ہو گیا۔ اس نے اس لڑکی کو دل کا غبار نکالنے کے لیے چھوڑ دیا تاکہ اس کا من ہلکا ہوجائے اور وہ بات کر سکے اور ایسا...