چالیسواں سال- عائشہ اسحاق

وه مٹی کے گھڑے کو تھامے بیٹھی پانی بھر رہی تھی۔ ہلکی ہلکی بارش اور فضا کو معطر کر دینے والی نمی بہت بھلی معلوم ہوتی تھی۔رات کے وقت ابر کا طوفان گزرنے کے بعد کالے پہاڑ ہیبت کا منظر پیش کر رهے تھے۔ ابھی کچھ دن پہلے ہی ان کی پانی کی لائن میں مزید پڑھیں

قید خانۂ شیاطین – ام شافعہ

ویرانے میں بنی اس بہت بڑی عمارت میں رات کے اس پہر مکمل تاریکی کا راج تھا۔ سوائے کمروں کے داخلی اور خارجی مشترکہ راستوں کے، جہاں چھوٹی چھوٹی مشعلیں تاریکی کو کم کرنے کی نامکمل سعی کر رہی تھیں۔ دھیمی اور ٹمٹماتی ہوئی روشنی ان کمروں کی دیواروں سے جب ٹکراتی تو ان کی مزید پڑھیں

ترقی – وقاص سلیم رانا

“اِس ٹوک سَے مَنے آٹھ بندے کاٹے ایں” ٹوکے کے دستے پر سے جمے ہوئے خون کی تہہ کو ناخنوں سے کھرچتے ہوئے اس نے کہا۔ “آٹھ!!” غلام محمد نے خوف سے جھرجھری لی۔ “ہاں، آٹھ” “آج والے کی تو بس لاتاں ای کاٹی، مَنا تو چودھری صاب سَے کیہا تھا کہ اس کا بِی مزید پڑھیں

چڑی روزہ – ناصر جاوید

ارے یہ کیا کررہے ہو؟ ابے اندھا ہے کیا؟ نظر نہیں آرہا ؟ ٹی وی دیکھ رہا ہوں تو تم نے روزہ نہیں رکھا کیا؟ ابے او مولوی کے بچے! کیا تیرے اسلام میں ٹی وی دیکھنے سے بھی روزہ ٹوٹ جاتا ہے؟ دیکھ، پہلی بات تو یہ ہے کہ اسلام صرف میرا نہیں اور مزید پڑھیں

کم عقل عورت – شمسہ ارشد

“کم عقل عورت بس کر ، تیرے دماغ میں کوئی بات آسانی سے آتی نہیں کیا ؟” اس نے ایک زور دار تھپر صالحہ کے گال پر رسید کیا اور اسے دھکا دیتا ہوا باہر نکل گیا ۔ وہ روز ہی اپنے گھر میں یہ تماشا دیکھتا تھا بلکہ اب تو وہ عادی ہوگیا تھا مزید پڑھیں

ریلوے سٹیشن – محمد جمیل اختر

“جناب یہ ریل گاڑی یہاں کیوں رکی ہے ؟” جب پانچ منٹ انتظار کے بعد گاڑی نہ چلی تو میں نے ریلوے سٹیشن پر اترتے ہی ایک ٹکٹ چیکر سے یہ سوال کیا تھا۔ “جناب، پیچھے ایک جگہ مال گاڑی کا انجن خراب ہوگیا ہے اب اس گاڑی کا انجن اسے لے کے اس سٹیشن مزید پڑھیں

بے حساب – شمسہ ارشد

“بیٹھو، مجھے تم سے کچھ بات کرنی ہے” “جی ادی! بولیں” “میں نے تم سے کتنے میں بات کی تھی تین کاموں کی؟ ” “ادی! تین ہزار میں، ایک ہزار جھاڑو کے، ایک ہزار برتن کے اور ایک ہزار کپڑے دھونے کے، سو روپے الگ سے کچرا پھینکنے کے ۔۔۔” وہ حیرت سے میرا چہرہ مزید پڑھیں

بلاعنوان – ضیغم اعوان

ان دونوں کا معاشقہ کافی عرصے سے چل رہا تھا ابتداء کچھ یوں ہوئی کہ سب سے پہلے کالج سے واپسی پہ ان کی نظر لڑی وہ پہلی ہی نظر میں ایک دوسرے کوبھا گئے آہستہ آہستہ فری ہوۓ ، فون پہ پیکیج لگا اور پھر گھنٹوں باتیں پھر چھپ چھپ کے پارکوں میں ملاقاتیں مزید پڑھیں

من الظلمت الی النور – عالیہ ذوالقرنین

“کاشف…. کاشف!!!! میرے بیٹے.. میرے لال! کہاں ہو تم؟ جواب دو “اس کی آواز بھی اب نقاہت اور تکلیف سے بمشکل کچھ دور تک ہی پہنچ پا رہی تھی ۔ تپتے صحرا میں وہ ننگے پاؤں بھاگ رہی تھی… حواس باختہ.. صدیوں کی تھکن چہرے پر لئے.. اس کے چہرے سے پسینہ آبشار کی طرح مزید پڑھیں