گلگت سے کالا پانی تک - امیرجان حقانی

آغازِسفر\n یہ میری ایک افیشل میٹنگ تھی۔ احباب کے ساتھ محفوِگفتگو تھا کہ سیل فون بجنے لگا۔ کال ریسو کی تو ایک کڑک دار آواز میں یہ مژدہ سنایا گیا کہ آج تین بجے استور کا سفر ہے۔ احباب سفر میں آپ بھی شامل ہیں۔ تین دن کا سفر ہے، کالا پانی تک جانا ہے۔ مسجد کا افتتاح ہے، آپ اپنا سیاحتی ذوق بھی پورا...