زنگر برگر - عظمی ظفر

پارک کی روش پر دوڑتے دوڑتے اس کی سانس پھول رہی تھی۔ لاکھ دل نے کہا کچھ دیر سانس لے لو مگر نہ، زنگر برگر کی پلیٹ خواب میں کئی بار نظر آچکی تھی، اس لیے رملہ نے خود سے تعبیر نکال لی کہ آج رات اسی سے پیٹ کے ارمان بھرے گی۔ ورنہ دل کے ارماں تو آنسوو ؤں میں لٹ گئے تھے، جب سے ڈائٹنگ پلان شروع کیا تھا۔ بس...