فارینہ الماسفارینہ الماس کو لکھنے پڑھنے کا شوق بچپن سے ہی روح میں گھلا ہوا ہے۔ ساتویں جماعت میں خواتین پر ہونے والے ظلم کے خلاف افسانہ لکھا جو نوائے وقت میں شائع ہوا۔ پنجاب یونیورسٹی سے سیاسیات میں ایم۔اے کیا، دوران تعلیم افسانوں کا مجموعہ اور ایک ناول کتابی شکل میں منظر عام پر آئے۔

کزن میرج سے اجتناب کیوں ضروری ہے؟ فارینہ الماس

ثمرہ کا دکھ بہت گہرا تھا۔ شاید اب کوئی ڈھارس کوئی تسلی اس کے دکھ کو سہلا نہ پائے گی۔ وہ ایک پڑھی لکھی باشعور لڑکی تھی کیونکہ ان کے خاندان میں شادیاں خاندان سے باہر کرنے کا رواج نہ تھا۔ سو اس کے والدین نے اس کی مرضی کے خلاف اس کی شادی اس کے فرسٹ کزن سے طے کر دی۔ اس رشتے کو طے کرتے ہوئے بہت سی...