فارینہ الماسفارینہ الماس کو لکھنے پڑھنے کا شوق بچپن سے ہی روح میں گھلا ہوا ہے۔ ساتویں جماعت میں خواتین پر ہونے والے ظلم کے خلاف افسانہ لکھا جو نوائے وقت میں شائع ہوا۔ پنجاب یونیورسٹی سے سیاسیات میں ایم۔اے کیا، دوران تعلیم افسانوں کا مجموعہ اور ایک ناول کتابی شکل میں منظر عام پر آئے۔

امریکہ میں گن فائرنگ کے بڑھتے واقعات - فارینہ الماس

کہتے ہیں کہ دوسروں کا برا چاہنے والے کے ساتھ خود بھی برا ہی ہوتا ہے، اسے ایک سادہ سی کہاوت میں یوں بھی سمجھا جاتا ہے کہ دوسروں کے لیے گڑھا کھودنے والا خود ہی اس گڑھے میں جا گر تا ہے۔ اگر اسے مزید سمجھنا ہو تو ایک مثال امریکہ کی بھی دی جا سکتی ہے، جس نے دنیا میں جہاں جہاں بدامنی اور جنگ کی کیفیت...