معاشرتی اصولوں پر بھی کوئی سمجھوتہ ہونا چاہیے - شاہد یوسف خان

اگر آپ شہر کے کسی فلیٹ میں چند دوستوں کے ساتھ رہتے ہیں اور آپ کے کچھ دیگر شہری دوست بھی ہیں تو ایک گزارش ہے کہ انہیں دن میں کوئی وقت دیجیے ورنہ رات ایک بجے آ جائیں اور باقی ہم کمرہ سو بھی رہے ہوں تو ان کے ہلے گلے، نعروں اور شور شرابے کے لیے یہی کافی ہے کہ آپ جاگ رہے ہیں۔ چاہے رات کے تین بج جائیں...