جاپان میں ٹریفک اور لاہور کی بے ہنگم موٹر سائیکلیں - عبد الباسط بلوچ

آپ بھی سوچتے ہوں گے جاپان سے کیا ہو آیا، ہر بات میں جاپان ؟ کیسا احسان فراموش آدمی ہے ، اپنے ملک کو بھول جاتا ہے،جس نے اس قابل بنایا؟ درحقیقت، ہر بات پر غیروں کو سراہنا مجھے بھی اچھا نہیں لگتا۔ بس ان کی مثالیں اس لیے دیتا ہوں کہ ان کو دیکھ کر مجھے اپنی بے ہنگم قوم کو بتانا مقصود ہے کہ کام ترتیب،معیار،اور مستقل مزاجی سے ہی بہتر ہوتے ہیں۔

آج اپنی پرانی روٹین کو دہراتے ہوئے کسی کام سے موٹرسائیکل پر لاہور میں نکلا۔ یقین مانیں انجانا سا خوف محسوس ہونے لگا۔ موٹر سائیکلوں کی بڑھتی ہوئی تعداد، سکڑتے روڈ اور اپنی انتہاؤں کو چھوتا شور۔جب میں اس کو جاپان کے دارالحکومت سے چھ سو کلومیڑ دور ایک شہر سے موازنہ کرتا ہوں تو دل بہت افسردہ ہو جاتا ہے۔ٹریفک کی بات کریں تو قانون کی پاسداری سے عملداری تک ہر چیز ہی کمال ہے۔ان کے روڈ ڈبل نہیں، سنگل ہیں لیکن ان میں موجود ڈسپلن کے کیا کہنے۔

جاپان میں ٹریفک قوانین بہت ہی سخت ہیں اگر آپ کی گاڑی کو کسی نے پیچھے سے آکر مارا تو تو پھر آپ جتنے مرضی پیسے مانگ لیں آپ کو ملیں گے۔ ڈھائی سے دس کروڑ تک تو عام سی بات ہے۔کار سے بھی مشکل کام موٹرسائیکل کا لائسنس حاصل کرنا ہے۔سائیکل بھی آپ بغیر رجسٹریشن کے نہیں چلا سکتے۔یہ سب کچھ کیوں ہے؟ کیونکہ وہاں کے حکمرانوں نے یہ باور کروایا ہے سب نظام آپ کے لیے ہیں اور آپ ہی نے اس کو لے کر چلنا ہے۔پیدل،سائیکل سوار بھی اشارے کا پابند ہے اور روڈ پار کرنے کے لیے خاص جگہ کے علاوہ روڈ کراس نہیں کر سکتا ۔اشارے پر ہر گاڑی کا دوسری گاڑی سے فاصلہ سات سے دس فٹ ہے۔پیدل کے حق کو تسلیم کرتے ہوئے پہلے پیدل گزرے گا۔ہر کوئی قانون کا پاسدار ہے۔ حیرانی ہوتی ہے نہ کوئی پولیس والا نظر آتا ہے لیکن اس کےباوجود کوئی نہ سگنل توڑتا ہے اور نہ کوئی جلدی میں ہونے کی وجہ سے ہارن بجاتا ہے۔پیدل اور سائیکل سوار کے لیے باقاعدہ الگ راستہ ہے جس پر وہ چلتے ہیں۔لیکن میرے لاہور کی ہر چیز ہی نرالی ہے اور مرضی والی ہے۔کبھی تو سدھرے کایہ وطن کا نظام میں مایوس نہیں پر امید ہوں۔

Comments

عبدالباسط بلوچ

عبد الباسط بلوچ

شعبہ صحافت سے خاص محبت رکھنے والے۔ ایم ایس سی کیمونیکیشن اسٹڈیز، ایم فل اسلامک سٹڈیز اور اب پی ایچ ڈی جاری

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */