کیا پیدائشی نابینا خواب دیکھ سکتا ہے - ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

ایک عجیب سا سوال ایک دفعہ مجھ سے کیا گیا ...
کیا ایک پیدائشی نابینا شخص ’’خواب‘‘ دیکھ سکتا ہے..؟
میرا جواب..
خواب آنکھوں سے نہیں دیکھے جاتے.

جی جناب! ایک ایسا پیدائشی نابینا جس نے روشنی کی ایک کرن بھی محسوس نہ کی ہو، اس کے خواب آوازوں اور احساسات پر مشتمل ہوں گے. تصاویر یا رنگوں پر نہیں ..

جبکہ ایک ایسا نابینا جو روشنی اور رنگ اور تصاویر کو دیکھ یا محسوس کر چکنے کے بعد بصارت سے محروم ہوا ہو، وہ خواب میں آوازوں کے ساتھ ساتھ تصاویر بھی دیکھے گا اور رنگ بھی.

ایک اور اہم بات یہ ہے کی ایک مکمل طور پر پیدائشی نابینا کے لیے اس کی تخلیق مکمل ہے اور اسے آنکھ یا بصارت کا کوئی شعور تب تک نہیں ہوتا جب تک آنکھ والا اسے اس کی کمی کا احساس نہیں دلاتا. سو اس کی کمی درحقیقت آنکھ والوں کے دیے کمی کے احساس سے اس کے علم میں آتی ہے.

یہ بات کہ مکمل پیدائشی نابینا صرف آوازوں کے خواب دیکھے گا. ہو سکتا ہے کہ یہاں میں غلط ہوں. اور وہ اپنے چھو کر محسوس کرنے کی خوبی سے شکلیں دیکھنے پر قادر ہوں

Comments

ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

دل میں جملوں کی صورت مجسم ہونے والے خیالات کو قرطاس پر اتارنا اگر شاعری ہے تو رابعہ خرم شاعرہ ہیں، اگر زندگی میں رنگ بھرنا آرٹ ہے تو آرٹسٹ ہیں۔ سلسلہ روزگار مسیحائی ہے. ڈاکٹر ہونے کے باوجود فطرت کا مشاہدہ تیز ہے، قلم شعر و نثر سے پورا پورا انصاف کرتا ہے-

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.