نقیب کی لاش اور قوم پرستی کا شیطان - کاشف حفیظ صدیقی

خون سرخ ہوتا ہے چاہے وہ خوبصورت پشتون نقیب محسود کا ہو یا قصور کی زینب کا ہو یامردان کی اسما کا یا تربت میں مارے جانے والے پنجابی مزدوروں کا ہو کراچی کے ڈیفنس کے انتظار، شاہ زیب اور خاور برنی کا ہو عمار ہاشمی ہو یا امجد احمد یا پروفیسر حسن ظفر عارف کا یا لیاری کے بے آسرا مکرانی ہوں یا پشاور کے چرچ...