کیا بھارت انگلینڈ سے ہار جائے گا؟ محمد عامر خاکوانی

مجھے یہ بات سن کر حیرت ہو رہی ہے کہ بھارت انگلینڈ سے جان بوجھ کر میچ ہار جائے گا۔ مزید حیرت اس پر کہ یہ بات بعض سابق کرکٹر بھی کہہ رہے ہیں۔

پہلی بات تو یہ کہ انگلینڈ سے بھارت کے لئے میچ جیتنا اتنا آسان ہرگز نہیں ۔ انگلینڈ اگرچہ اپنے پچھلے دو اہم میچز سری لنکا اور آسٹریلیا سے ہار چکی ہے، مگر اسے کوئی رائٹ آف نہیں کر سکتا۔ ان کے پاس مضبوط ترین بیٹنگ لائن ہے ، روٹ، بٹلر، مورگن ، سٹوکس وغیرہ پرفارم کریں تو دنیا کی کسی بھی بائولنگ لائن کو تباہ کر سکتے ہیں۔ ویسے انگلینڈ کے لئے بھی یہ جینے مرنے کا معاملہ ہے، وہ اپنا پورا زور لگائیں گے اور ہر قیمت پر میچ جیتنے کی کوشش کریں گے۔

دوسرا بڑی ٹیمیں ، خاص کر جو ورلڈ کپ جیسا ٹورنامنٹ جیتنا چاہ رہی ہوں، اس طرح کے میچز جان بوجھ کر نہیں ہارتیں۔ کھلاڑیوں کے لئے انڈرپرفارم کرنا اتنا آسان نہیں ہوتا۔ اس قدر ہائی پروفائل میڈیا کوریج، انتہائی متحرک سوشل میڈیا کے ہوتے ہوئے کھلاڑیوں کو اپنی عزت، بھرم کا بھی خیال رکھنا پڑتا ہے۔ مجھے اس پر ہمیشہ حیرت ہوتی ہے جب کوئی سادگی سے کہہ دیتا ہے کہ بورڈ نے میچ ہارنے کا کہا ہوگا، یا پاک بھارت میچز میں کبھی کہہ دیتے ہیں کہ پاکستانی حکومت کے کہنے پر ہماری ٹیم ہار گئی۔ ایسا نہیں ہوسکتا۔ کوئی احمق سے احمق وزیراعظم بھی روایتی حریف سے جان بوجھ کر میچ ہارنے کا نہیں کہہ سکتا کہ بات آخر نکل ہی جاتی ہے۔ گیارہ کھلاڑی اور سپورٹس سٹاف۔ کہیں نہ کہیں سے لیک ہوجاتی ہے اور پھر طوفان کھڑا ہوجاتا ہے۔

تیسرا ٹیمیں ٹورنامنٹ جیتنے کے لیے اپنے میچز جیتنے کے ٹیمپو کو برقرار رکھنا چاہتی ہیں تاکہ مسلسل میچ جیتے جائیں اور اسی ردھم میں ٹرافی لے لی جائے۔ کوئی ایک ہار بھی ان کا ردھم خراب اور کھلاڑیوں کا مورال ڈاؤن کر سکتی ہے۔ بھارتی ٹیم ایسا نہیں چاہے گی۔

یہ بھی پڑھیں:   مصر سے مکہ اور کشمیر تک - محمد رضی الاسلام ندوی

چوتھا بھارت پاکستان کو سیمی فائنل میں آنے سے کیوں روکے گا؟ اس کا اسے کیا فائدہ ہوگا؟ الٹا ورلڈ کپ ہسٹری میں پاک بھارت مقابلوں کا تناسب خوفناک حد تک بھارت کے حق میں ہے۔ پاکستان سیمی فائنل پہنچا تو امکان ہے کہ اس کا مقابلہ بھارت سے ہو، جو ممکنہ طور پرنمبر ون پوزیشن لے سکتا ہے، خاص کر انگلینڈ کو ہرانے اور اپنا آخری میچ جیتنے کے بعد۔ بھارتی ٹیم پاکستان کو ہرانا نسبتا آسان سمجھے گی، انگلینڈ یا نیوزی لینڈ سے سیمی فائنل کھیلنا انہیں زیادہ چیلنجنگ لگے گا۔

اس طولانی تمہید کا صرف اتنا مقصد ہے کہ خواہ مخواہ کی سازشی تھیوریز تخلیق کرنے کے بجائے ہمیں اپنے دونوں میچز جیتنے پر توجہ رکھنی چاہیے، مطلب دعائوں کا رخ ادھر ہی فوکس رکھیں۔ باقی تقدیر پر چھوڑ دیں۔ پاکستان اگر اپنے اگلے دونوں میچز جیت جائے اور خدانخواستہ تکنیکی وجہ سے سیمی فائنل نہ پہنچ پایا تب بھی ہمارے لئے یہ باوقار طریقے سے ٹورنامنٹ کا فنش ہوگا۔

ویسے مجھے لگ تو یہی رہا ہے کہ اگر پاکستان افغانستان اور بنگلہ دیش کو ہرا پایا تو ان شااللہ سیمی فائنل پہنچ ہی جائے گا۔ پاک بھارت سیمی فائنل بھی ایک اچھوتا تجربہ ہوگا، جس میں چیمپئنز ٹرافی کا ری پلے ہوسکتا ہے۔ مگر یہ سب کچھ ابھی قبل ازوقت ہے ۔

Comments

محمد عامر خاکوانی

محمد عامر خاکوانی

محمد عامر ہاشم خاکوانی کالم نگار اور سینئر صحافی ہیں۔ روزنامہ 92 نیوز میں میگزین ایڈیٹر ہیں۔ دلیل کے بانی مدیر ہیں۔ پولیٹیکلی رائٹ آف سنٹر، سوشلی کنزرویٹو، داخلی طور پر صوفی ازم سے متاثر ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.