سعید غنی خاموش کیوں؟ - خلیل عباس

صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ و بلدیات و اطلاعات و صنعت و صحت پارلیمانی امور اور ڈپٹی وزیر اعلی سندھ جناب سعید غنی صاحب، ان کا تعلیم سے کوئی واسطہ ہے نہ ہی وزارت تعلیم سے کوئی لینا دینا۔
لیکن کتنی عجیب بات ہے نا کہ تاجروں کا مسئلہ ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
ڈاکٹروں کا مسئلہ ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
مولویوں کا مسئلہ ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
ٹرانسپورٹرز کا مسئلہ ہو تو سعید غنی پیش پیش۔

سندھ حکومت کی ترجمانی کرنی ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
وفاقی حکومت پر چڑھائی کرنی ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
سندھ کی کارکردگی کو آسمان تک پہنچانے کی ذمہ داری ہو تو سعید غنی پیش پیش۔
مخالفین سے زبان لڑانی ہو تو سعید غنی پیش پیش۔

مگر سندھ کے تعلیمی نظام سے متعلق کوئی سوال ہو تو سعید غنی خاموش۔
این ٹی ایس پاس اساتذہ کی مستقلی کا سوال ہو تو سعید غنی خاموش۔
سندھ کے تعلیمی بورڈز میں چیئرمینز کی تعیناتی کیوں نا ہوسکی۔ سعید غنی خاموش۔

انٹر بورڈ میں نتائج تبدیلی کی تحقیقات کیوں اور کس نے روکی ۔ سعید غنی خاموش۔
سندھ کی سرکاری جامعات میں وائس چانسلرز کیوں نہیں لگے ۔ سعید غنی خاموش۔
کالجوں میں سینیئر اساتذہ کی موجودگی میں سیاسی وابستگیوں والے جونیئر اساتذہ کو پرنسپلز کیوں لگایا گیا؟ سعید غنی خاموش۔
لاک ڈائون سے سب کھل گیا، صرف اسکول بند۔ سعید غنی خاموش۔

تعلیم سے آخر اتنی چڑ کیوں؟ کیا اس لیے کہ پڑھے لکھے سندھ کے بجائے ان پڑھ سندھ ہی انہیں‌"سوٹ" کرتا ہے؟ کسی کو سعید غنی ملے تو یہ سوال ضرور ان سے پوچھے یہ الگ بات ہے کہ اس پر بھی وہ رہیں‌ گے خاموش!

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com