مسٹر اپ ٹو ڈیٹ - صائمہ وحید

ہم ملاتے ہیں آپ کو"مسٹر اپ ٹو ڈیٹ" سے ۔۔ویسے تو انھیں سارا زمانہ جانتا ہے۔اور یہ بھی سارے زمانے ۔۔چھوٹے بڑے چور اچکے ۔۔ڈاکو۔۔دہشت گرد۔سب۔۔کچھ انکی ناک کے نیچے کام کر جاتے ہیں۔اااور کچھ کو پکڑ کر یہ اپنے "باوا"کو دے دیتے ہیں۔۔کسی کو ڈراتے ہین۔اور کسی سے ڈرتے ہیں۔

کبھی ڈائیلاگ بول کر عوام کو لالی پوپ دیتے ہیں۔فرماتے ہیں 72 سال ہوگئے۔کسی نے کشمیر پر سودے بازی نہیں کی تو اب کون کرے گا۔ ۔۔مقبوضہ کشمیر میں ڈیڑھ مہینہ ہورہا ہے بلیک آؤٹ ہے۔۔نسل کشی ہورہی ہے۔۔تویہ سودے بازی،غداری ۔۔غداروں کی اجارہ داری نہی تو پھر اور کیا ہے۔ ذرا خود ہی سوچو۔۔۔سرحدوں۔۔اذاد کشمیر میں مسلسل حملے ،گولہ باری۔۔عوام۔فوجی شھید ۔گھر تباہ ہو رہے ہیں ۔مگر بھارت ت کو منہ توڑ جواب دینے کے صرف طبل بجا بجا کر اپنے ہی منہ ٹیڑھے۔۔پیلے، نیلے کر کے رہ جاتے ہی۔ انکے جانشین۔۔وزیر اعظم عمران خان فرماتے ہیں۔ دو ایٹمی طاقتیں آمنے۔۔سامنے ہیں ۔ہرگز نہی۔بھارت پاکستان کی شہ رگ پردانت جمائے خون چوس رہا ہے۔۔۔یہ بزدلوں کی طرح ۔کبھی جلسے ۔۔کبھی ۔ٹرمپ سے بھارت کے لئے فضائی سرحدیں کھلی ہیں۔تجارت جاری ہے ادھر بھارت مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کی بوٹیاں نوچ رہا ہے۔دراصل ہمارے بادشاہوں۔شہنشاہوں۔۔عالی جاہلوں نے خود اپنے چہروں پر سیاہی مل لی ہے۔۔معیشت کی کیمو تھراپی۔۔فزیو تھراپی۔ جو مرضی کرلیں جب تک سود ختم ۔۔ائی ایم ایف کا گلے سے طوق۔۔امریکہ کا خوف سر سے نہی اتارا جائے گا۔۔معیشت بیمار۔۔زبوں حال رہے گی۔اب یہ فیصلہ مسٹر اپ ٹو ڈیٹ نے کرنا ہے۔۔ معیشت درست کرنی ہے۔۔بھارت کے خونیں پنجے سے اپنی شہ رگ آزاد کرانا ہے۔ یا۔۔جلسہ جلسہ۔۔مذاکرات۔۔کھیلنا ہے۔۔عوام کابخار ٹھنڈا کرنے کبھی پیرا سیٹا مول دینی ہے۔۔یا عوام کی فلاح کے لئے عملی اقدامات کرنے ہیں۔

سودی معیشت سے عوام کی جان چھڑانئیے۔ اللہ اور رسول سے جنگ نہ کریں۔بھارت اور اسکے بھائی۔قصائی۔۔امریکہ۔۔اسرائیل سے جنگ کریں ۔ یہ جنگ صرف بھارت سے نہی۔۔عوام۔۔منتظر ہیں۔اپ کب غیرت۔حمیت۔جراءت کا مظاہرہ کرتے ہیں۔پاکستان کی سلامتی۔۔تکمیل۔۔ترقی۔غیرت۔۔بھارت سے جنگ۔۔جہاد میں ہے وہی قومیں سر اٹھا کر دنیا میں عزت اور وقار سے رہتی ہیں۔جنکے ارباب اقتدار و اختیار۔ غیرت حمیت۔۔کا مظاہرہ ۔۔بروقث درست فیصلہ کرتے ہیں۔ہم مسٹر اپ ڈیٹ سے مؤدبانہ التماس کرتے ہیں ۔فیصلہ کیجیئے ۔کھٹی میٹھی گولیاں نہ دیجئے۔۔خدارا۔۔اب اور دیر نہ کریں اللہ کے شیروں کو آتی نہیں روباہی۔۔آخر میں اس جملے کا اضافی کردو۔۔۔