اسلام بہترین چوائس کیوں ہے؟ حافظ محمد زبیر

یورپ میں آباد مسلمان جب غیر مسلموں کو اسلام کی دعوت دیتے ہیں، بین المذاہب مکالمہ پر سیمینارز کرواتے ہیں، اسلام کے تعارف کے لیے ورکشاپس کرواتے ہیں، تو ایک سوال عام طور مسلمانوں سے بہت زیادہ کیا جاتا ہے کہ اسلام ہی بہتر چوائس کیوں ہے؟ مطلب یہ کہ ایک غیر مسلم عیسائیت، یہودیت، ہندومت، سکھ مت، بدھ مت، سیکولر ازم اور لبرل ازم پر اسلام کو کیوں ترجیح دے؟ اس کی کیا دلیل ہے کہ اسلام ان سب مذاہب اور ادیان میں سے ایک بہترین چوائس ہے؟ اپنے دوست عظیم الرحمن عثمانی صاحب سے اس بارے گفتگو ہو رہی تھی کہ جس کا خلاصہ یہ ہے کہ یہ سوال ہی غلط ہے کہ اسلام ایک بہترین چوائس کیسے ہے؟ اسلام چوائس تو ہے ہی نہیں۔ اب اس سے یہ بات ذہن میں آتی ہے کہ اگر چوائس نہیں ہے تو کیا جبر ہے؟ نہیں اسلام جبر بھی نہیں ہے۔ کہنے کا مطلب یہ ہے کہ آج اگر آپ یہ کہتے ہیں کہ زمین گول ہے تو یہ آپ کی چوائس نہیں ہے، یہ حقیقت (reality) ہے۔ یعنی اگر کوئی شخص یہ کہہ رہا ہے کہ زمین چپٹی (flat) ہے، یا چوکور ہے، یا تکون ہے، اور اگر آپ یہ کہیں کہ زمین گول ہے تو یہ آپ کی چوائس نہیں ہے بلکہ حقیقت ہی یہی ہے۔ اب اس پر یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ سب مذاہب یہی دعوی کرتے ہیں کہ حقیقت وہی ہے جو ہمارے پاس ہے۔

تو اس کا جواب یہ ہے کہ اللہ عزوجل نے ہر انسان میں حقیقت کو پہچاننے کا ایک آلہ (detector and sensor) نصب کر دیا ہے کہ جسے "فطرت" کہا گیا ہے۔ انسان اگر حق کا متلاشی ہو اور غیر متعصب ہو تو جیسے ہی حقیقت اس کے سامنے آتی ہے تو اس کی "فطرت" اس کے حق ہونے کی تصدیق کر دیتی ہے۔ تو اگر کسی شخص کی "فطرت" اس کے ماحول نے مسخ نہ کر دی ہو تو جیسے ہی آپ اسلام کو اس کے سامنے پیش کریں گے تو وہ اس کی تصدیق کر دے گا۔ اسی بات کو اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک حدیث میں یوں بیان فرمایا کہ ہر شخص فطرت اسلام پر پیدا ہوتا ہے لیکن اس کے ماں باپ اسے یہودی، نصرانی اور مجوسی بنا دیتے ہیں۔ پس اس میں کوئی شک نہیں کہ غیر مسلموں کے والدین، ان کے ماحول، ان کے میڈیا نے اسلامو فوبیا کے نام پر ان میں اسلام اور مسلمانوں سے جو نفرت، تعصب اور عداوت پیدا کر دی ہے، وہ اسلام کو قبول کرنے میں رکاوٹ (barrier) بنتی چلی جا رہی ہے۔ تو آج کی اصل ضرورت انسانوں کے سینسرز (sensors) درست کرنے کی ضرورت ہے۔ تو اگر آپ سینسر درست کر دیں تو اسلام ان کے اندر سے نکلے گا، نہ کہ آپ کو باہر سے انڈیلنا پڑے گا۔ اور غیر مسلم کے اس سینسر کو درست کرنے کا ایک بہترین طریقہ آپ کا اس کے عمدہ رویہ اور اعلی اخلاق ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   اسلام میں بیوی کے حقوق - رانا اعجاز حسین چوہان

تو اسلام، انسان کی فطرت کے عین مطابق ہے لیکن فطرت ہی اتنی مسخ ہو چکی ہے کہ اسلام کو پہچان ہی نہیں پا رہی۔ تو اس کا حل یہی ہے کہ انسان کو فطرت پر لایا جائے کہ اس میں سے وہ تعصبات، نفرتیں، دشمنیاں ختم کرنے کی کوشش کی جائے جو اس کے ماحول نے اس کی ذات میں اسلام اور مسلمانوں کے بارے میں پیدا کر دی ہیں۔ اور اس میں بھی کوئی شک نہیں ہے کہ اسلام کے بارے میں کچھ غلط امیج خود مسلمانوں نے اپنے رویوں اور اخلاق سے پیدا کیا ہے۔ آج مسلمان خود بھی اپنوں اور دوسروں کے ساتھ انتہا پسندانہ رویوں کی وجہ سے اسلام کے پھیلاو میں سب سے بڑی رکاوٹ بنتے چلے جا رہے ہیں۔

ٹیگز