اسلامیات نہم کا تنقیدی جائزہ - محمود خارانی

بلوچستان ٹیکسٹ بک بورڈ کی مرتب کردہ اسلامیات برائے میٹرک ( NO SO Academic EDN:/ 2_6/ 2276 مؤرخہ 18_12_2013 ایڈیشن 2016ء) علمی و فنی لحاظ سے جن غلطیوں سے بھرپور ہے' وہ بہت زیادہ ہیں'، ان اغلاط کی نوعیتیں کچھ یوں ہیں:

(1)... ترجمہ میں خامیاں:
ترجمہ میں کئی مقامات پر سقم پایا جاتا ہے. لگتا ایسا ہے کہ مصنفین کو تشریح اور بامحاورہ ترجمے میں باریک فرق معلوم نہیں. ملاحظہ ہو صفحہ نمبر : 33/44/50/63/64/65/67/70 وغیرہ

(2)... مضامین میں بیجا تکرار:
بعض چیپٹرز میں مضامین کا تکرار اتنا زیادہ ہے کہ یہ کتاب تصنیف نہیں، کوئی تقریر لگ رہی ہے جیسے منبر پر بیٹھا جوشیلا خطیب وعظ کر رہا ہے. ملاحظہ ہو ص:5/6/33/34/49/49/58/59/70/71/151/ وغیرہ

(3)... مشقی سوالات میں سطحیت اور بے ڈھنگی:
بعض مشقی سوالات کچھ ایسے بے تکے ہیں کہ ہنسی آتی ہے. مختصر کی جگہ تفصیلی جواب اور تفصیلی کی جگہ مختصر مانگا گیا ہے. اسی طرح درست غلط اور خالی جگہوں میں ایسے ایسے "کرشمے" نظر آتے ہیں کہ داد دینے کو جی چاہتا ہے. ص : 9/27/28/36/54/79/141/.

(4)... عنوان اور بیان میں عدم مطابقت:
عنوان کچھ اور دیا گیا ہے اور اس کے ذیل میں جو تقریر جھاڑی گئی ہے، وہ کسی اور درد کی دوا ہے ملاحظہ ہو. ص: 5/7/64/76/77 وغیرہ

(5)... غلط تصورات و تعبیرات :
بعض اصطلاحات کی نامکمل تعریف اور بعض کی غلط تعبیر کی گئی ہے اور سمجھی گئی ہے: ص: 33/51/74/76/140 وغیرہ

(6)...تشریح میں ابہامات اور ذہنی کنفیوژن:
بعض تشریحات میں ایسا لگتا ہے کہ خود مصنفین ذہنی الجھاو اور کنفیوژن کا شکار ہیں، چنانچہ متعلقہ آیت یا حدیث کی تشریح میں اندھیرے میں تیر چلانے والے محسوس ہوتے ہیں ص : 27/42/53/5وغیرہ

(7)... ربط و ضبط اور ترتیب کا فقدان:
اس کتاب میں مضامین کا ربط و ضبط مرغ عنقا ہے. ترتیب و تہذیب کے حوالے سے کتاب میں ہمہ گیر الٹ پلٹ اور اصلاحات کی شدید ضرورت ہے. پوری کتاب کاپی پیسٹ کا بےمثال نمونہ لگتی ہے' ادھر سے اٹھایا اور ادھر لگادیا، کوئی تعلق ہے یا نہیں? اس سے کوئی سروکار نہیں. جو بات شروع میں بطور تمہید کہنے کی ہوتی ہے، وہ آخر میں ہے اور جو اختتامی نوعیت کی باتیں ہوتی ہیں وہ شروع یا درمیان میں ہوتی ہیں. اس طرح کے عجوبے پوری کتاب میں جابجا آپ کو ملیں گے. تاہم چند صفحات یہ ہیں : 5/7/39/42/53/64/67/76/77 وغیرہ.

الغرض پوری کتاب از سر نو اصلاح طلب ہے، کیونکہ "اسلامیات ہمہ داغ داغ شد پنبہ کجا نہم"
دیگر اساتذہ و طلبہ کی فاضلانہ آراء کا انتظار رہے گا.