محمد بن سلمان اگلے ہفتے سعودی بادشاہ بن کر اسرائیل سے اتحاد کریں گے، برطانوی اخبار کا دعویٰ

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اس وقت کا انتظار کر رہے ہیں جب وہ بادشاہ بن جائیں گے ، اس کے بعد ان کا پہلا ہدف ایران اور ایران کے حمایت یافتہ جنگجو گروپ ہوں گے۔ پہلے مرحلے میں وہ اسرائیل کی مدد سے لبنان میں ایرانی حمایت یافتہ جنگجو گروپ حزب اللہ کے ساتھ جنگ لڑیں گے۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق سعودی عرب کے حکمران شاہ سلمان بن عبدالعزیز اگلے ہفتے تک اپنے بیٹے محمد بن سلمان کو بادشاہی سونپ کر خود خادم الحرمین الشریفین کے عہدے تک محدود ہوجائیں گے۔ شاہ سلمان کا کردار محدود ہوتے ہی محمد بن سلمان بطور بادشاہ اپنا کردار ادا کرنا شروع کردیں گے۔

سعودی شاہی خاندان کے انتہائی قریبی ذرائع نے بتایا ہے کہ ایک دفعہ محمد بن سلمان بادشاہ بن گئے تو ان کا سب سے زیادہ فوکس ایران پر ہوگا، اس مقصد کیلئے وہ اسرائیل کے ساتھ اتحاد بھی کرسکتے ہیں تاکہ لبنان میں ایرانی حمایت یافتہ گروہ حزب اللہ کو کچلا جا سکے۔ اسرائیلی فوج کی حمایت حاصل کرنے کیلئے محمد بن سلمان انہیں پہلے ہی اربوں ڈالر کی براہ راست امداد کی یقین دہانی کرا چکے ہیں۔ محمد بن سلمان براہ راست یا اکیلے حزب اللہ کا مقابلہ نہیں کرسکتے، اس لیے اسرائیل کی مدد سے لبنان میں ان کے خلاف جنگ شروع کرنا ہوگی، اگر اسرائیل کے ساتھ معاملات طے نہ پائے تو دوسرا آپشن حزب اللہ کے ساتھ شام میں جنگ لڑنا ہوگا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں جس دن کرپشن الزامات پر شہزادوں سمیت اعلیٰ شخصیات کے خلاف گھیرا تنگ کیا گیا اسی دن لبنان کے وزیر اعظم سعد الحریری نے حزب اللہ پر قتل کی منصوبہ بندی کا الزام عائد کرکے اپنے استعفیٰ کا اعلان کیا تھا۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */