اسپیکر نے اپوزیشن کو وزیراعظم کے خلاف تحریک استحقاق پیش کرنے سے روک دیا

اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے اپوزیشن کو وزیراعظم کے خلاف تحریک استحقاق پیش کرنے سے روکتے ہوئے کہا کہ معاملہ عدالت میں ہے اس پر تحریک پیش نہیں کی جاسکتی۔\r\n\r\nقومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی زیر صدارت ہوا جس میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے اظہار خیال کرنے کے بعد وزیراعظم نوازشریف کے خلاف تحریک استحقاق پیش کرنے کی اجازت مانگی تاہم اسپیکر نے یہ کہہ کر انہیں تحریک استحقاق پیش کرنے سے روک دیا کہ معاملہ عدالت میں ہونے کی وجہ سے یہ تحریک پیش نہیں کی جاسکتی ہے، اس دوران خورشید شاہ اور اسپیکر کے درمیان نوک جھونک بھی ہوئی اور خورشید شاہ نے کہا کہ ہماری تحریک استحقاق حقیقت پر مبنی ہے، اسے پیش کرنے کی اجازت نہ دینا بہت زیادتی ہوگی تاہم اسپیکر ایاز صادق نے کہا کہ تحریک پر رولنگ دے چکا ہوا اور رولز کے تحت اب تحریک پیش نہیں کی جاسکتی۔\r\n\r\nوزیراعظم کے خلاف تحریک استحقاق پیش کرنے کی اجازت نہ ملنے پر اپوزیشن اراکین نے ایوان میں شدید احتجاج کیا، تحریک انصاف کے اراکین نے اسپیکر سے ایوان میں بات کرنے کی اجازت مانگی تاہم اسپیکر کی جانب سے اجازت نہ ملنے پر پی ٹی آئی اراکین نے ایوان میں شدید ہنگامہ آرائی اور حکومت مخالف نعرے بازی کی، اراکین نے اسمبلی اجلاس کے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ کر اسپیکر کے سامنے اچھال دیں جب کہ اسپیکر ڈائس کا بھی گھیراؤ کیا، ایوان میں ہنگامہ آرائی پر کان پڑی آواز سنائی نہ دی جس پر اسپیکر نے ایوان کی کارروائی کو 15 منٹ کے لیے معطل کردیا لیکن اسمبلی اجلاس دوبارہ شروع ہونے کے بعد بھی صورتحال معمول پر نہ آنے پر اسپیکر نے اجلاس کل شام 4 بجے تک معطل کردیا۔\r\n