میگھن اور ہیری - فرح رضوان

میگھن اور ہیری کے اتنے بڑے اقدام کی صرف پکچرز اور تبصرے ،کب،کیوں کیا ،کیسے،کہاں ،کون اور اندر کی بات، اصلی بات جیسے تبصروں کو ایک طرف رکھ کر اگر یہ دیکھیں کہ اس میں ہمارے لئے سبق کیا ہوسکتا ہے یا ہونا چاہئے تو آپکی نگاہ میں وہ کیا ہوگا ؟

جیسے ہیری نے اصل معنی میں آج کے مسلمان مرد کو اپنے عمل سے سکھایا ہے کہ قوام کسے کہتے ہیں۔ کڑے وقت میں دو کام کر سکتا تھا کہ بیگم آپ جاؤ جدھر جانا ہے میں اپنا کمفرٹ زون چھوڑ کر جانے کا بھی نہیں،مزے سے نیٹ پر کسی بھی بین ویبسائٹ پر بیٹھا اپنا وقت اور بیوی کی عمر گنوا دیتا اور کہہ دیتا دھونس سے ،غضبناک ہو کر کہ اتنی بڑی ساری محلاتی ٹیم کا پریشر لے کر تمہارا حق دلانے کا تو سوچنا بھی نہ ۔میں خود تمہارا سامان اٹھا کر تین لفظ کہہ کر تمہارے ابا کے گھر بٹھا دوں گا ،بچہ رکھ لوں گا ۔ارے کیا مشکل تھا رنگ کا نسب کا طعنہ دے دے کر چپکی بٹھا دینا اسے۔

ہک ہا میری قوم کے بھائیوں ! اپنے گھروں کے قوامو کچھ تو سوچو ذرا کیسے آپ لوگ کم ہمت مجبور بنے ہوتے ہو جب سانجھے کے گھروں اور کاروباروں میں اپنے والد یا بھائیوں کے ساتھ ہوتے ہو ،وہ کیسی بھی ہیر پھیر کریں ،سائیڈ میں حرام پراڈکٹس بھی بیچنے لگیں یا سود کے لین دین کے ساتھ بنیاد رکھیں آپ کا رویہ کیا ہوتا ہے ؟
والدین سے حسن سلوک کے حکم کو سب سے غلط طریقے سے ہمارے ہاں سمجھا جاتا ہے خواہ والدہ گھریلو سطح پر زیادتی کریں یا والد کاروباری سطح پر ایسی زیادتی کہ آخرت داؤ پر لگ جائے آپ ہمت کر کے بیوی بچے لے کر اپنا محل نہیں چھوڑتے کہ انکو یہاں خطرہ ہے۔

یاد رکھیں ہر ماں کے پاؤں کے نیچے جنت نہیں اور نہ ہی ہر باپ کی بد دعا عرش ہلا سکتی ہے ۔۔۔۔اس درجے کے لئے اللہ کے ہاں والدین کے بھی درجات درکار ہیں ۔آہ ! محل تو بہت بڑی بات ہے ہمارے ہاں تو شادیوں میں ناچ گانے کی محفل ،مزیدار کھانے،رشتہ داروں اور احباب سے پی آر کو تیاگ کر اپنی فیملی کو اس شر اور اسکے وبال سے بچانا نہیں آتا سہل پسندی، چسکا ،غفلت،لا پرواہی،کوتاہ بینی،بے ہمتی ہمیں چنے منے فیصلے کرنے تک سے بھی روک دیتی ہے ۔

Comments

فرح رضوان

فرح رضوان

فرح رضوان کینیڈا میں مقیم ہیں۔ خالق کی رضا کی خاطر اس کی مخلوق سے لگاؤ کے سبب کینیڈا سے شائع ہونے والے ماہنامے میں قریباً دس برس قبل عائلی مسائل پرلکھنا شروع کیا تھا، اللہ کے فضل و کرم سے سلسلہ جاری ہے۔ دلیل کی مستقل لکھاری ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */