کروڑوں مسلمانوں کے دل کی دھڑکن بن گیا - زبیر منصوری

وہ شیر کی طرح جست لگا کر کودا ، جھپٹا ، ٹوٹ پڑا ، لمحوں میں سارا شیطانی ارادہ خاک مین ملایا ، اور کروڑوں مسلمانوں کے دل کی دھڑکن بن گیا .
سانس لیتے کروڑوں اربوں ہیں مگر زندگی بس سانس لینے کا نام تو نہیں؟

یہ تو اپنی زندگی اپنے مستقبل اپنی دولت اپنے گھر اپنے بچوں سے اوپر ہو کر کسی اعلی اور ارفع مقصد کے لئے جینے اور جی جان کی بازی لگا دینے کا نام ہے
اور یہ وہ کر گزرا امر ہو گیا۔ تم جیو ہزاروں سال ، اور تم کیا سمجھتے ہو ہم مین سے کچھ کو خرید کر باقیون کو گمراہ کر کےتم ہمارے چیتے ختم کر دو گے؟غیرت مسلم مار دو گے؟ یہ حمیت کہین نہ کہین سے پھوٹ نکلے گی یہ اللہ کا نورہےاور نور کی نہ کوئی سمت ہے نہ یہ وقت اور زمانے کا قیدی تم عالم اسلام کو یرغمال بناویہ تمہارےاندر سے اٹھ کھڑا ہو گا ، اسلام عالم انسانیت کی آخری امید ہے ، اور اللہ اس امید کو ٹوٹنے نہین دے گا ان شااللہ

Comments

زبیر منصوری

زبیر منصوری

زبیر منصوری نے جامعہ منصورہ سندھ سے علم دین اور جامعہ کراچی سے جرنلزم، اور پبلک ایڈمنسٹریشن کی تعلیم حاصل کی، دو دہائیاں پہلے "قلم قبیلہ" کے ساتھ وابستہ ہوئے۔ ٹرینر اور استاد بھی ہیں. امید محبت بانٹنا، خواب بننا اوربیچنا ان کا مشغلہ ہے۔ اب تک ڈیڑھ لاکھ نوجوانوں کو ورکشاپس کروا چکے ہیں۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.