محمد مرسی کو قتل کیا گیا، عالمی عدالت میں کارروائی کروائیں گے - رجب طیب ایردوان

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ مصرکےسابق صدر محمد مرسی کو قتل کیا گیا، وہ طبعی موت نہیں مرے۔ ہم مصر کے خلاف عالمی عدالتوں میں کارروائی کرانے کے لیے لازمی اقدامات اٹھائیں گے۔

ایردوان نے استنبول کے سانجاق تپے میں منعقدہ اجتماعی افتتاحی تقریب سے خطاب میں مصر کے جمہوری طریقے سے منتخب شدہ پہلے اور واحد صدر محمد مرسی کی وفات کے حوالے سے بتایا کہ "مرسی کی موت قضائے الہی سے واقع نہیں ہوئی بلکہ ان کا قتل کیا گیا ہے۔ بڑے افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ مرحوم کمرہ عدالت میں 20 منٹ تک زندگی و موت کی جنگ لڑتے رہے۔ وہاں پر موجود حکام اس صورتحال کے سامنے ہاتھ پر ہاتھ رکھے بیٹھے رہے۔ ہم اس چیز کا تعاقب جاری رکھی گے اور عالمی عدالت میں مصری حکومت کے خلاف کاروائی کے لیے لازمی اقدامات اٹھائیں گے۔ ہم اسلامی تعاون تنظیم سے اس چیز کا مطالبہ کرتے ہیں۔ اس تنظیم کو اس حوالے سے لازمی قدم اٹھانا ہو گا۔

واضح رہے کہ مصر کے سابق صدر محمد مرسی قطر کے لئے مبینہ جاسوسی کے الزام میں مقدمے کا سامنے کر رہے تھے اور کیس کی سماعت کے دوران کمرہ عدالت میں انتقال کرگئے تھے۔ محمد مرسی 30جون 2012 سے 3 جولائی 2013 تک مصر کے صدر رہے، فوج نے ان کی حکومت کا تختہ الٹ کر اقتدار پر قبضہ کرلیا تھا۔