اسرائیل صدر ایردوان کو تنقید کا نشانہ بنانے سے قبل اپنے گریبان میں جھانکے

جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی کے ترجمان عمر چیلیک نے کہا ہے کہ اسرائیل کا وزیر انصاف ابھی اس قابل نہیں ہے کہ وہ صدر رجب طیب ایردوان کو تنقید کا نشانہ بنا سکے۔ متعلقہ وزیر اس سے قبل "فلسطینی ماؤں کو قتل کرنے کی بھی اپیل کرچکے ہیں" اس لیے اس قسم کے خیالات کے مالک انسان کے ذہن پر شک ہی کیا جاسکتا ہے۔ اسرائیل کے وزیر انصاف آیلیت شاکید نے امریکی فوجی دستوں کے شام سے انخلا کے بارے میں جائزہ پیش کرتے ہوئے صدر ایردوان سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے انھیں تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

عمر چیلیک نے ان خیالات کا اظہار آق پارٹی کے ہیڈکواٹر میں پریس کانفرنس کے دوران خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ صدر رجب طیب ایردوان پر یہودی دشمن ہونے کا جو الزام عائد کیا جا رہا ہے، وہ سراسر غلط ہے کیونکہ سب اچھی طرح جانتے ہیں کہ صدر رجب طیب ایردوان یہودی نسل کشی کے بارے میں کئی بار واضح بیانات دے چکے ہیں اور ان کو اسی وجہ سے عالم اسلام دیگر رہنماؤں سے الگ ہی مقام حاصل ہے۔

عمر چیلیک نے کہا کہ جس طرح صدر یہودی نسل کشی کے مخالف ہیں اسی طرح وہ اسلامی فوبیا کی بھی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ اس لئے صدر ایردوان پر یہودیوں کی مخالفت کرنے کا الز ام عائد کرنا انہیں کسی صورت بھی زیب نہیں دیتا ہے بلکہ ایسا کرنے والے شخص کی ذہنی مرض میں مبتلا ہونے کی عکاسی ہوتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ترکی پر کرد دشمنی کا الزام لگانا بھی ذہنی امراض میں مبتلا افراد ہی کی تخلیق ہے۔ ایسے ذہنی مرض میں مبتلا افراد ترکوں اور کردوں کے درمیان نفاق پیدا کرنے کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں جو کسی صورت بھی کامیاب نہیں ہونے دی جائے گی۔

عمر چیلیک نے کہا ہے کہ اسرائیل کے وزیر انصاف کا قد اتنا زیادہ نہیں ہے کہ وہ صدر ایردوان تک رسائی حاصل کرسکیں اور تنقید کا نشانہ بنا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ وزیر اس سے قبل"فلسطینی ماؤں کو قتل کرنے کی بھی اپیل کرچکے ہیں" اس لیے اس قسم کے خیالات کے مالک انسان کے ذہن پر شک ہی کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس لیے اس شخص کے دہشت گرد تنظیم پی وآئی ڈی، وائی پی جی، ایس جی کے حق میں بیان ذہنی امراض میں مبتلا ہونے کی نشان دہی کرتا ہے۔ انھوں نے اسرائیل کی وزیرانصاف کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کو کوئی ایسا بیان جاری نہیں کرنا چاہیے جس کی وہ اہلیت نہیں رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ منہ میں آنے والے ہر الفاظ کو ادا کرنے والا شخص ہمیشہ وہی سنتا ہے جس کی وہ خواہش نہیں رکھتا۔ شاید اسرائیل کا وزیر انصاف اسی اصول پر عمل درآمد کر رہا ہے۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */