بڑا حوصلہ چاہیے - سید سلمان رضا

بڑا حوصلہ چاہیے، بڑا جگرا چاہیے … قصور کی بے قصور زینب کے اغوا کی سی سی ٹی وی ویڈیو دیکھنے کے لیے۔

ایک معصوم سی جیتی جاگتی گڑیا اور ایک بھیڑیا۔ بھیڑیے کے ہاتھ میں گڑیا کی انگلی۔ گڑیا کی بے فکری کو دیکھ کر محسوس ہوتا ہے بھیڑیا اس کا کوئی واقف ہے۔ سی سی ٹی وی نے بس اتنا ہی دکھایا۔

اس کے بعد ایک تصویر ہے جسے دیکھنے کے لیے بھی بڑا حوصلہ چاہیے، بڑا جگرا چاہیے۔ کچرے کے ڈھیر پر پڑی معصوم سی گڑیا کی روندی ہوئی لاش اور اس سب کے بیچ بڑا حوصلہ چاہیے، اس سب کے بیچ گزرے ان دیکھے مناظر کو چشم تصور سے دیکھنے کے لیے۔

گڑیا بھیڑیے کے ساتھ بڑے اطمینان سے چلی گئی اور پھر ……

پورے چار دن گڑیا لاپتہ رہی، بھیڑیا چار دن تک بھنبھوڑتا رہا ہو گا۔

بڑا حوصلہ چاہیے … وہ آوازیں سننے کے لیے، جو کسی سی سی ٹی وی فوٹیج میں نہ ریکارڈ ہو سکیں۔ ویسے بھی سی سی ٹی وی کی ریکارڈنگ میں آواز کہاں ہوتی ہے؟

کتنا چیخی ہو گی؟

کتنا تڑپی ہو گی؟

کتنا مچلی ہو گی؟

کتنا روئی ہو گی؟

کتنا سسکی ہوگی؟

کتنا چلّائی ہو گی؟

کتنا درد، کتنا کرب سہا ہو گا؟

کرب اور درد جیسے الفاظ اس قابل کہاں کہ وہ بوجھ اٹھا سکیں جو گڑیا نے سہا ہو گا۔ پورے چار دن…

جن کی اولاد نہیں، وہ بھی لرز گئے اور جو صاحب اولاد ہیں، خاص کر جو بیٹیوں والے ہیں، ان کی حالت نہ پوچھیے۔

اور…… بڑا حوصلہ چاہیے، اس طرح کے بیانات جاری کرنے کے لیے جو ارباب اختیار نے جاری کیے۔ کسی کو مسلے ہوئے بھول سے بد بو آ رہی ہے تو کوئی مشورہ دے رہا ہے کہ بچوں کو گھروں میں رکھنا چاہیے اور کوئی کہہ رہا ہے کہ لاش پر سیاست نہ کیجیے۔

لیکن اے صاحبان اقتدار! جان لیجیے۔ عوام کا حوصلہ اب جواب دیتا جا رہا ہے، صبر کا پیمانہ لبریز ہوتا جا رہا ہے۔ زبانی جمع خرچ کے بجائے عملاً کچھ کر دکھائیے اور بہت جلد کر دکھائیے۔ بھیڑیے کو پکڑ کے دکھائیے۔ انصاف کے تقاضے فی الفور پورے کیجیے اور سر عام کسی چوک پہ ٹانگ دیجیے۔

لیکن… اس کو یکدم پھانسی نہ دے دیجیے گا۔ پھانسی سے پہلے اس کی چیخیں سنوا دیجیے، اس کا تڑپنا دکھا دیجیے۔ اس کا مچلنا دکھا دیجیے، اس کی سسکیاں سنوا دیجیے، اس کا چلّانا دکھا دیجیے، اس کو اسی درد سے گزار دیجیے، اس کو اسی کرب سے گزار دیجیے۔

پلیز… جلدی سے وہ وقت وہ گھڑی وہ لمحہ لے آئیے۔ یقین جانیے۔ اس وقت کا انتظار کرنے کے لیے بھی… بڑا حوصلہ چاہیے۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */