سانحہ احمد پورشرقیہ کی تین بنیادی وجوہات - ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

دوست ناراض ہوں گے لیکن میں یہی کہوں گا کہ آج احمد پور شرقیہ میں واقع ہونے والے سانحہ کی تین بنیادی وجوہات تھیں:
1. شغل میلہ کی نفسیات
2. ایک دوسرے کی دیکھا دیکھی کام کرنا
3. مال مفت دل بے رحم کی پالیسی

وہاں پیدل بھی تھے، موٹرسائیکل سوار بھی اور کار والے بھی. دھوتی پوش بھی دکھائی دیے، شلوار قمیض میں ملبوس بھی اور پینٹ شرٹ والے بھی. بچے اور نوجوان بھی اور ادھیڑ عمر بھی. سب ہی طرح کے لوگ موجود تھے اور سب ایک ہی کام کر رہے تھے.

یہ ایک طرح سے ہمارا قومی شعار بن چکا ہے قطع نظر اس بات سے کہ ہمارا معاشی، سماجی اور تعلیمی پس منظر کیا ہے؟

رہی سہی کثر ایک جانب غربت نے نکال دی تو دوسری جانب لاٹری نما گیم شوز نے. جو عام دنوں میں تو ٹیلیوژن پر جاری رہتے ہی ہیں، رمضان میں تقدیس کی چادر اوڑھ کر مزید سرگرمی سے دیکھے اور دکھائے جاتے ہیں.

عرض صرف یہ کرنا ہے کہ ہر صورتحال شغل میلہ نہیں ہوتی، اور نہ ہی دوسروں کی دیکھا دیکھی کنویں میں چھلانگ لگا دینا دانشمندی ہے.

سب سے بڑھ کر یہ کہ مال مفت نام کی کوئی شے اس دنیا میں نہیں ہوتی. ہر مال کی قیمت ہوتی ہے، کہیں پیسہ، کہیں عزت نفس اور کہیں، اپنی جان اور زندگی.

یاد رکھیے!
آپ کی جان کے ساتھ کچھ لوگ اور بھی بندھے ہیں۔ ان کا مستقبل، خوشیاں سب آپ سے وابستہ ہیں، ان کے متعلق سوچنا بھی آپ ہی کا فرض ہے.

اس لیے ٹینکر سے رستا تیل، کسی ڈبل شاہ کی ناقابل یقین آفر، یورپ جانے کی دو نمبر اسکیم، کچھ بھی آپ کو اس راستے پر نہ لے جائے جس کی نہ تو کوئی منزل ہے، اور نہ اس سے واپسی ممکن.

اللہ تعالٰی تمام جاں بحق افراد کی مغفرت فرمائیں، ان کے لواحقین کو صبر جمیل سے نوازیں اور زخمیوں کو صحت کاملہ عطا فرمائیں. آمین.

Comments

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش کی دلچسپی کا میدان حالاتِ حاضرہ اور بین الاقوامی تعلقات ہیں. اس کے علاوہ سماجی اور مذہبی مسائل پر بھی اپنا ایک نقطہ نظر رکھتے ہیں اور اپنی تحریروں میں اس کا اظہار بھی کرتے رہتے ہیں.

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */