نکل کر خانقاہوں سے ادا کر رسم شبیری۔۔نگہت فرمان

کشمیر کا نام لیتے ہی لفظ نہیں آنسو بولنے لگتے ہیں لفظ تو لگتا ہے کہیں کھو ہی جاتے ہیں کیا لکھیں کیوں لکھیں برسوں سے الفاظ کا گورکھ دھندہ ہی تو جاری ہے نوحہ پر نوحہ اور مرثیہ نگاری کی جارہی لیکن نتیجہ وہاں آج بھی گل خار بنے ہوۓ ہیں اور ہر طرف جبر و زیادتی ہے۔آج بھی کربلا بپا ہے ۔ آج بھی کشمیری اپنی...