دوسری محبت ستارے سے - دعا عظیمی

یہ سچ تھا کہ سمندر مجھے کھینچتا تھا جیسے چکور کو چاند اور سورج مکھی کو سورج. لہر آئی، اس نے مجھے لپیٹا، ایک گہرا شور ابھرا، لہر نے مجھے بانہوں میں بھرا اور سینے سے لگایا، پھر سکوت چھا گیا، اندھیرا ہی اندھیرا. معلوم نہیں کب ریتلی زمین پہ کسی دوسری لہر نےمجھے پٹخا، سورج کی کرنیں میرے وجود کو تھپتھپا...