کتابوں کی دکان جہاں کوئی دکاندار نہیں - ابو محمد مصعب

اگر ہمارے ملک کے کسی بڑے شہر میں ایسا ہو کہ کتب کی ایک دکان ہو جو انواع و اقسام کی کتب سے بھری ہوئی ہو، لیکن وہاں کوئی دکاندار نہ ہو، بلکہ خریدار خود ہی ایمانداری سے، خریدی گئی کتب کی قیمت گُلک میں ڈال جاتے ہوں تو کیا خیال ہے ایسی دکان کتنا عرصہ چل پائے گی؟ یہ بات مفروضہ نہیں، حقیقت ہے لیکن پاکستان...