محروم چئیو کبھی نہیں مرتی - روبینہ فیصل

میں نے کتا ب کی آخری لائن ختم کی توگھر کی تنہائی میں، میرے ساتھ وہ نو سال کی بچی آ کھڑی ہوئی، جو جاپان کے ایک چھوٹے سے قصبےYoroido میں، ٹوٹے پھوٹے گھر میں پیدا ہوئی تھی۔ جس کو آگے چل کر گیشا بننا تھا، لیکن ابھی وہ بچی میرے سامنے کھڑی تھی، اس کی سرمئی آنکھوں میں آنسو تھے، جو شاید اس نے کھبی...

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */