’’پروین شاکر‘‘ ان کی خوشبو آج بھی مہک رہی ہے - لیاقت علی جتوئی

24سال کی عمر میں کوئی شاعری کی دنیا میں داخل ہو اور44سال کی عمر میں جہانِ فانی سے کوچ کر جائے لیکن جانے کے بعد بھی اپنی گہری چھاپ چھوڑ جائے۔ پروین شاکر اردو شاعری میں ایک ایسا ہی نام ہے۔ کچھ لوگوں کی زندگی پر نظر ڈالیں تو ان پر یہ شعر صادق آتا ہے: 24نومبر 1952ء،پیر کی سرد رات اور رِم جھم برستی...