اقبال اور عصر حاضر - سحر فاروق

اقبال استعارہ ہے امید کا۔ آپ کی شاعری اور فکر کا مطالعہ کرنے سے یہ حقیقت واشگاف ہوتی ہے کہ آپ جس صبح نو کی طرف توجہ مبذول کر وا رہے ہیں وہ امید کی کرن امت پر چھائے جمود اور قنوطیت کے گہرے بادلوں کے سائے سے چھٹکارا حاصل کیے بغیر نمایاں نہیں ہو سکتی۔ اس سے بھی قبل انسان کو خودی کی معرفت حاصل کرنا...