لیجیے جناب، وہ پڑی ہے آپ کی ’’تبدیلی‘‘ ۔ ابو محمد مصعب

دو دن سے ملک کی قومی ائیرلائن کو بیچنے کی باتیں سُن رہے تھے، اب خبر آ رہی ہے کہ بہت سے وفاقی سرکاری اداروں کی زمینیں اور اثاثے بیچنے کا پروگرام بنا لیا گیا ہے تاکہ سر پہ لٹکتے قرضے ادا کیے جا سکیں۔ اگر کوئی ’’تبدیلی‘‘ کے حامیوں سے پوچھے کہ بھئی، یہ سب کیا ہے تو ان کا بس ایک ہی جواب ہوتا ہے کہ...