اے پتر ہٹاں تے نہیں وکدے - اسماء طارق

سنا ہے جب اکہتر کی جنگ میں نانا چھ سال کے لیے بنگال میں جنگی قیدی رہے تو پیچھے والوں پر قیامت کم نہیں گری تھی۔ منتوں مرادوں سے مانگے گئے خاندان کے بڑے بیٹے تھے، گویا کہ ساری ذمہ داری انھی کے کندھوں پر تھی، ان کی ماں غم سے جو نڈھال وہ الگ اور جو نانی دنیا کے ہاتھوں دربدر ہوئیں وہ الگ۔ وہ تو اسی غم...