علم و جہل اور ہمارا عملی رویہ - ابراہیم جمال بھٹ

کسی کو بات سمجھ میں نہ آئے، اسے سمجھنے کے لیے کسی سمجھانے والے کے پاس جاکر زانوئے تلمذ تہ کرنا کوئی عیب نہیں، بلکہ ایسا کرنا تعمیر ذات اور تہذیب صلاحیت کے لیے ایک اچھا اقدام ثابت ہوتا ہے۔ اس کے بجائے کم فہم انسان اپنی آراء کے خول میں گرفتار ہوکر کھرے کھوٹے کا فیصلہ صادر کرنے لگے تو ممکن ہے کہ وہ...