ڈوبتے شامیوں کی آہ و زاری - واحد بشیر

میری بہن جس کو میں نے پچھلے دو سال سے نہیں دیکھا ہے، نے مجھ سے کہا کہ وہ سمندر کو ربر کی چھوٹی کشتی میں عبور کرنے جارہی ہے۔ یہ کہہ کر اس نے فون کاٹ دیا محض اس لیے کہ وہ اس بارے میں میری رائے سننا نہیں چاہتی تھی۔وہ گہرے جذبات کے تحت یہ بات مجھ سے صرف اس لیے کہہ رہی تھی کہ اگر وہ سمندر میں ڈوب گئی تو...