چیزیں آنی جانی ہیں - حنا نرجس

بریک کی گھنٹی بجی. داؤد سر طارق کی ہدایت کے مطابق سٹاف روم سے ریاضی کی کاپیاں لے کر واپس کمرہ جماعت میں داخل ہوا تو رشید کینٹین پر جانے کے لیے کمرہ جماعت سے نکل رہا تھا. ایک لمحے کے لیے دونوں کی نگاہیں ملیں. داؤد کی نظروں میں سرد مہری، بیگانگی اور لاتعلقی تھی جبکہ رشید کی نگاہوں میں شرمندگی، معذرت...