دکھ بھری داستان - عظمیٰ ظفر

اوئے باو سرور! کدھر جارہے ہو؟ فرید نے ائر فون ایک کان سے نکالتے ہوئے کہا اور سرور کے سامنے آگیا۔جانا کدھر ہے؟ آرہا ہوں دکان سے، گھر ہی جاوں گا، سسرال تو جانے سے رہا۔سرور نے تھیلی ایک ہاتھ سے دوسرے ہاتھ میں منتقل کرتے ہوئے اپنی گرفت مضبوط کی، مبادا فرید اسے چھین لے۔ آو !! اس میں کیا ہیرے موتی لے...