دنیا کی کشش اور زیب وزینت (حصہ اول) - مفتی منیب الرحمٰن

عربی زبان میں دنیایا تو دُنُوْئَ ۃْ اوردَنَائَ ۃْسے مشتق ہے، اس کے معنی ہیں:’’ خسیس ہونا ،کمینہ وذلیل ہونا‘‘یا ’’دَنِیْئٌ‘‘ سے یا’’ دُنُوٌّ‘‘سے ماخوذہے، اس کے معنی ہیں: کسی چیز کے قریب ہونا، کیونکہ دنیا آخرت کے مقابلے میں قریب ترین ہے ، الطاف حسین حالی نے کہا ہے: دنیائے دَنی کو نقشِ فانی سمجھو...

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */