جنید جمشید - رمشاجاوید

سوچتی ہوں یہ اندھیرے ڈھلیں گے کیسے لوگ رخصت ہوئے اور لوگ بھی کیسے کیسے آہ۔۔ تین سال گزر گئے... اوران تین سالوں میں ایک دن بھی ایسا نہیں گزرا جب ہم نے انہیں یاد نہ کیا ہو.. شب کی تنہائیوں میں...سحر کے دھند لکوں میں...اورایک دن بھی ایسا نہیں گزرا جب ہم نےان کے لیے دعائے مغفرت نہ کی ہو.. آنسو نہ بہائے...