ایک چھلی والے کا ایمان - اسریٰ غوری

یہ سڑک کے کنارے کھڑا سترہ اٹھارہ برس کا چھلی والا تھا۔ ہم نے گاڑی روکی اور ایک چھلی بنانے کا کہہ کر شیشہ اوپر کرنے ہی لگے تھے کہ اس کی دو ہم لڑکوں (ایک پینٹ بابو تھا اور دوسرا اس جیسا ہی مگر اس سے ذرا بڑا اور شاید ہندو، جو اس کی باتوں سے لگا) کے ساتھ ہونے والی گفتگو کان میں پڑی تو ہاتھ وہیں رک گئے۔...