عقل پر عشق غالب ہوجائے تو اسے یقین کہتے ہیں - علی حسنین نقوی

کہا جاتا ہے کہ آنکھ نہ ہو تو نظارے کا کوئی قصور نہیں ہوتا۔ حضوری قلب نہ ہو تو قرب حقیقت کا کوئی مطلب نہیں نکلتا۔ تمنائے سفر نہ ہو تو جزائے سفر کی کیا بات کرتی اور دل مومن نہ ہو تو زبان کا کلمہ کسی کام کا نہیں۔ دل کے مومن ہونے کے لیے یقین کا ہونا بہت ضروری ہوتا ہے کیونکہ یقین خدا ہے، یقین ایمان ہے...