جنوبی پنجاب صوبے کا لوٹا محاذ - شاہد یوسف خان

جنوبی پنجاب کے خطے کی پسماندہ عوام تو اچانک جھوم اٹھی ، جب سے سُنا کہ ہمارے خطے کے مہان قسم کے سیاستدان جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کے لیے اچانک سے متحرک ہوگئے ہیں۔ یقین جانیے کہ جذباتی کیفیت ہے کہ کہ اب صوبہ بن جائے گا اور جنوبی پنجاب کی عوام اپنے آزاد صوبے میں آزاد سانسیں لے کر ترقیوں کی نئی معراج کو...

تانیہ خاصخیلی ملالہ تو نہیں تھی - شاہد یوسف خان

کہاں ملالہ یوسفزئی جیسی عظیم ہستی اور کہاں تانیہ خاصخیلی جیسی سندھ میں ایک غریب کی بیٹی؟ پھر دونوں پر ہونے والے ظلم کا بھی تقابلی جائزہ لیا جائے تو نتیجہ یہ نکلتا ہے کہ جتنا ظلم طالبان نے ملالہ جیسی علم و ہنر کے نمائندے پر کیا تھا، اتنا ظلم تانیہ پر وڈیرے نے تو نہیں کیا۔ ملالہ تو تعلیم عام کرنے کے...

مسلک پرستی کا کم ہوتا اثر اور معاشرتی تبدیلیاں - شاہد یوسف خان

اس رحجان کا اندازہ آپ نے بھی لگایا ہوگا کہ دین کی طرف راغب نوجوان طبقے کی اکثریت، جو کسی مسلک پرست کے ہتھے نہیں چڑھی، معاشرے میں مثبت کردار ادا کر رہی ہے۔ اب مساجد چاہے جس مسلک کی بھی ہوں، جہاں بظاہر مسلکی زہر نہیں انڈیلا جاتا تو وہاں نوجوان طبقہ نمازیں ادا کرتا نظر آتا ہے۔ اہلحدیث کی مساجد میں بڑی...

انسانیت کے علمبرداروں کے غیر انسانی رویے - شاہد یوسف خان

جب چھوٹے چھوٹے بچوں کو بھیک مانگتا، ہوٹل پر برتن دھوتا، بیرا گیری کرتا دیکھتا ہوں تو دل نم ہوجاتا ہے۔ ان معصوم بچوں کو تو سکول میں ہونا چاہیے تھا۔ یہ اگر دھلے ہوئے ہوتے تو کتنے خوبصورت ہوتے، کتنے پیارے لگتے؟ خیر ماں باپ کا کچھ قصور تو ہوتا ہے اور کچھ مجبوری بھی ہوتی ہے۔ ہر سال چائلڈ لیبر پر سینکڑوں...

یورپ اور ترکی کی ترقی، آنکھیں نم کیوں؟ - شاہد یوسف خان

کبھی کبھی تو دل کرتا ہے کہ پاکستان سے اٹھ کر، بلکہ پورا گاؤں اٹھا کر، ترکی چلا جاؤں یا پھر یورپ۔ جہاں کی عظیم کہانیاں اور کامیابیوں کے قصے ہمیں سنائے اور پڑھائے جاتے ہیں اور دل کی حسرت یہاں تک پہنچ جاتی ہے کہ بس چلتا تو ملک عزیز پاکستان کو کسی کامیاب ریاست میں ہی ضم کردیتا۔ سرحدیں ملیں یا نا ملیں...

معاشرتی اصولوں پر بھی کوئی سمجھوتہ ہونا چاہیے - شاہد یوسف خان

اگر آپ شہر کے کسی فلیٹ میں چند دوستوں کے ساتھ رہتے ہیں اور آپ کے کچھ دیگر شہری دوست بھی ہیں تو ایک گزارش ہے کہ انہیں دن میں کوئی وقت دیجیے ورنہ رات ایک بجے آ جائیں اور باقی ہم کمرہ سو بھی رہے ہوں تو ان کے ہلے گلے، نعروں اور شور شرابے کے لیے یہی کافی ہے کہ آپ جاگ رہے ہیں۔ چاہے رات کے تین بج جائیں...

ہمارا مسئلہ پانامہ نہیں - شاہد یوسف خان

شہر میں زندگی گزارنے کے بعد جب دیہاتوں میں جانا ہوتا ہے تو دو قسم کےاحساسات ہوتے ہیں ایک تو یہ کہ اس زندگی اور ماحول سے بالکل الجھن اور چڑ ہونے لگتی ہے یا پھر اس ماحول کا احساس اور دکھ ہونے لگتا ہے۔ شہر میں پلنے بڑھنے والوں کے لیے تو دیہات کی گرمی میں ایک دن بھی گزارانا بہت ہی کٹھن ہے۔ چند دن پہلے...

یہ 62،63 کو اکھاڑ کر پھینک کیوں نہیں دیتے - شاہد یوسف خان

ہمارے گاؤں میں ایک بزرگ کبھی کبھار ایسے ازراہ مزاح جملے کہہ جاتے تھے جو جب بھی یاد آتے ہیں تو ہنسی نکل جاتی ہے اور خصوصاً ویسی جگہ پر۔ ایک مرتبہ ہم مسجد میں عصر کی جماعت کے لیے کھڑے ہوئے تو مولوی صاحب نے کہا کہ اپنے پائنچے ٹخنوں سے اوپر کردیجیے، اور یہ جملہ تقریباً تین مرتبہ کہا تو بزرگ مرحوم نے...

خوشامدی کہیں نیّا نہ ڈبو دیں - شاہد یوسف خان

حکومتی کشتی کا پس منظر تو یہ ہے کہ پچھلے چار برس کے دوران حکومت ایک کے بعد ایک بحران سے گزر رہی ہے۔دہشت گردی، دھرنے، افغانستان، بھارت، بلوچستان، کراچی، سول ملٹری تعلقات کا ٹھنڈا گرم، نجکاری و کرپشن اسکینڈلز، احتساب، معاشی اتار چڑھاؤ وغیرہ وغیرہ اور پھر ان بحرانوں کے بعد فائنلائزیشن ہوتی ہے تو...

کب تک رادھا ناچے گی ؟ - شاہد یوسف خان

جے آئی ٹی رپورٹ میں کافی حد تک احتیاط برتی گئی ہے اور ملزمان اور حاکم وقت کو براہ راست مجرم نہیں بنایا گیا بلکہ احتیاط اور لحاظ والا معاملہ کیا گیا ہے فیصلے سے پہلے قانونی ماہرین، تجزیہ کار تو یہی باور کرانے کی کوشش کرا رہے ہیں کہ میاں صاحب بمعہ اہل و عیال اس معاملے میں مجرم ہیں۔ رپورٹ میں یہ بھی...

مٹھائیاں بانٹ لیں، فیصلہ آنے میں وقت لگ سکتا ہے - شاہد یوسف خان

ہم سیاسیات اور صحافت کے طالعلموں کو کیا پتہ کہ یہ قانونی اور آئینی تقاضے کیا ہوتے ہیں اور کیسے پورے کیے جا سکتے ہیں؟ یہ تو بڑے بڑے قانون دان اور مفکرین ہی جانتے ہیں کہ فیصلے کیسے کیے جا سکتے ہیں اور عوام کو دو دو مہینے مصروف رکھا جا سکتا ہے۔ مجھے تو کبھی کبھار ایسا لگتا ہے کہ ہماری قوم کو تعلیم،...

سیکولرز کے قرب و جوار سے - شاہد یوسف خان

کلین شیو ہوں، موسیقی بھی سنتا ہوں، بالی ووڈ سے لے کر ہالی ووڈ تک سب کی موویز بھی دیکھتا ہوں۔ اگر لالی ووڈ کی پرانی فلمیں بھی مل جائیں تو وہ بھی کبھی کبھار دیکھ لیتا ہوں۔ پینٹ، جینز، دور حاضر کے مطابق مختلف فیشن ایبل ڈریسز جو پاکستانی معاشرے کے مطابق ہوں پہنتا ہوں۔ خواتین کے ساتھ چائے پانی، کھانا...

بڑھتا ہوا الحاد انتشار کی وجہ - شاہد یوسف خان

مردان یونیورسٹی میں جو دلخراش واقعہ پیش آیا جس میں درجنوں طلباء نے ایک لڑکے عبداللہ کو قادیانیت کی تبلیغ کے الزام میں تشدد کا نشانہ بنایا لیکن انتظامیہ کی مداخلت کی وجہ سے چھوڑ دیا۔ پھر ایک اور نوجوان، جس کا نام مشال خان ہے، سخت تشدد کے ساتھ قتل کر دیا گیا۔ یہ قتل کیوں ہوا؟ یہ تو قانونی اداروں کی...

کلبھوشن یادیو اور بلوچستان - شاہد یوسف خان

بھارتی جنتا پارٹی کے ایک رکن سبرامینیم سوامی نے کہا ہے کہ اگر پاکستان نے کلبھوشن یادیو کو سزا موت دی تو بھارت کو بلوچستان کی علیحدگی کی حمایت شروع کر دینی چاہیے اور اسے ایک علیحدہ ملک کے طور پر تسلیم کر لینا چاہیے۔ اس کے علاوہ بھارت کی وزیر خارجہ سشما سوراج نے بھی پاکستانی حکومت کو خبردار کرتے ہوئے...

ساہیوال نیوزی لینڈ سے دور تو نہیں - حافظ یوسف سراج

بحران میں قیادت کس طور بروئے کار آتی ہے ، یہ ہمیں نیوزی لینڈ نے بتایا، طوفانوں سے قومیں کس طور نبرد آزما ہو کے اور نکھر کے ظہور کرتی ہیں، یہ بھی نیوزی لینڈرز نے آشکار کر دکھایا، دراصل نیوزی لینڈ آگ میں آ گرا تھا، قیادت اور قوم نے مل کر مگر اس آگ کو گلزار میں بدل ڈالا۔ جناب عمران خان کا معاملہ...

وزیرستان عسکریت پسندی سے امن کی دہلیزتک - قادر خان یوسف زئی

پاکستان کے سب سے حساس علاقے وزیر ستان کو پاکستانی عوام سمیت دنیا بھر کے تمام ذرائع ابلاغ کے لئے بھی کھول دیا ہے۔شمالی وزیرستان خیبر پختونخوا کا ضلع اور بنوں کے سنگم پر واقع ہے۔ اس کا صدرمقام میران شاہ ہے۔وزیر اور داوڑ قبائل یہاں کے بڑے قبائل شمار ہوتے ہیں۔ جب کہ جنوبی وزیرستان کا صدرمقام وانا ہے...

اسلام اور فنون لطیفہ از علامہ یوسف القرضاوی - سہیل بشیرکار

عام طور پر مذاہب کے بارے میں یہ تصور پایا جاتا ہے کہ یہ دنیا سے دوری پیدا کردیتے ہیں۔ مگر دین اسلام کا مزاج اس کے برعکس ہے. اسلام دین اور دنیا میں تفریق کاقائل نہیں۔ یہ دنیا کو اچھے سے برتنے کی ترغیب دیتا ہے۔ ہاں یہ بات ضرور ہے کہ اسلام انسان کے اندر یہ احساس ہمیشہ زندہ دیکھنا چاہتا ہے کہ وہ ہر عمل...

‎ہندوستانی ٹھگ اور امیر علی ٹھگ کی داستان - ثناء اللہ خان احسن

ٹھگ سنسکرت کے اصل لفظ ستھگہ سے ماخوذ اردو زبان ٹھگ مستعمل ہے ۔ اس کے معنی ہیں چھپا ہوا یا پوشیدہ۔ اردو میں اصل معنی میں ہی بطور اسم مستعمل ہے۔ 1672ء میں عبداللہ قطب شاہ کے "دیوان" میں ملتا ہے۔ آج کے زمانے میں ٹھگ کا لفظ چالاک اور مطلب پرست آدمی سے لے کر دھوکے باز، جرائم پیشہ افراد تک کے لیے استعمال...

چونتیس سال بعد- خالد مسعود خان

اس کام کی ابتدا آفتاب عالم نے کی۔ طارق کا واٹس ایپ پر پیغام ملا کہ اپنی کلاس کا گیٹ ٹو گیدر کیا جائے۔ پھر طارق نے واٹس ایپ پر ایک گروپ بنا دیا اور اس کا نام Get Together at Multan رکھ دیا۔ یہ کوئی بائیس تیس دن پہلے کی بات ہوگی۔ میں تب آذربائیجان کے شہر ''باکو‘‘ جانے کی تیاری کر رہا تھا۔ میں، شوکت...

نگران وزیراعظم کی گیدڑ سنگھی- خالد مسعود خان

ایمانداری کی بات ہے‘ مجھے اب تک یہ سمجھ نہیں آیا کہ آخر نگران وزیراعظم کا نام اتنا صیغہ راز میں رکھنے کی کیا وجہ ہے؟ کیا نگران وزیراعظم کا نام کوئی ایٹمی راز ہے؟ کیا یہ کسی نہایت ہی پردہ دار قسم کی گھریلو خاتون کی فیملی فنکشن کی تصویر ہے‘ جس کی عوام الناس میں تشہیر نہیں کی جانی چاہئے یا یہ خود کش...

مارو اور بھاگو - قادر خان یوسف زئی

سیانے درست کہتے ہیں کہ پہلے تولو اور پھر بولو۔ یہ کہاوت نواز شریف پر صادق آرہی ہے کہ سابق وزیراعظم نے تول کر ہی بولا ہوگا، ورنہ وہ کبھی قومی سلامتی کمیٹی کے مشترکہ اعلامیے کو مسترد نہیں کرتے۔ قومی سلامتی کمیٹی میں تینوں مسلح افواج پاکستان اور حساس اداروں کے سربراہان سمیت وزیراعظم اور ان کی کابینہ...