توہین رسالت، فقط تباہی ملت کفر - کرن وسیم

‏ولقدِ استُهزئَ برسلٍ من قبلك فأمليتُ للذين كفروا ثم أخذتُهم‌ ۖ فكيف كان عقاب

ترجمہ: تم سے پہلے پیغمبروں کا بھی مذاق اڑایا گیا تھا اور ایسے کافروں کو بھی میں نے مہلت دی تھی، مگر کچھ وقت کے بعد میں نے ان کو گرفت میں لے لیا، اب دیکھ لو کہ میرا عذاب کیسا تھا۔

(سورہ رعد، آیت 32)

ہاں مذاق ہی تو اڑایا گیا تھا ... استہزاء ہی تو کرتے تھے کفار ... ہر دور کے پیغمبر کے ساتھ... اسکی دعوت دین .. اسکی سنتیں ... اسکے اصحاب ... اسکی عاجزی اور خلوص .. ہر ہر پہلو تضحیک کا نشانہ بنا لیا کرتے تھے... ایسے ہی مذاق اڑاتے تھے نوح علیہ السلام کا .. جب وہ کشتی تیار کررہے تھے اللہ کی ہدایات اور اسکی نگرانی میں.. سمندر سے کافی فاصلے پر کشتی کی تیاری کرنا کفار کے نزدیک مذاق ہی تو تھا.. ظاہری آنکھ سے تو ایک انوکھی حرکت ہی تھی جو نوح علیہ السلام کررہے تھے.. مگر وہی مذاق اڑانے والے اس کشتی میں سوار ہونیوالے خوش نصیبوں میں شامل نہ ہوسکے جب جان لیوا طوفان انکو نگلنے آیا...بالآخر تہس نہس ہوکر رہ گئے.

مضحکہ خیز ہی تو لگتی تھیں اصحاب مدین کو حضرت شعیب علیہ السلام کی باتیں.. بھلا اپنے ہی فروخت کردہ مال میں ہمیں تصرف کا اختیار کیوں نہیں... ناپ تول میں کمی بیشی ہمارا ذاتی معاملہ ہے.. ہمارا مال ہم جیسے چاہے فروخت کریں.. کم دیں یا زیادہ ... ہمیں یہ نصیحتیں نہیں سننی.. ہم تو شعیب ع کو بہت عقلمند اور دانا سمجھا کرتے تھے اب کیا اسکے کہنے پر باپ دادا کے معبود چھوڑ دیں..یہی جواب دیا کرتے تھے عاد , ثمود.. عاد , جنکے ہم پلہ کوئ قوم اس دنیا میں دوبارہ نہ پیدا کی گئ.. وہ بھی اپنے وقت کے پیغمبر کی تضحیک و توہین کیا کرتے تھے .. ہود ع کیسی انوکھی بات کرتا ہے.. کیا ہم سے زیادہ طاقتور بھی کوئ ہوسکتا ہے?? -- ایسا کون واحد رب ہے جسے ہم نہیں جانتے اور جو ہمیں عذاب دے سکتا ہے.. استہزاء , توہین , تضحیک ... راہ حق پر لگنے والی ٹھوکریں اور پتھر بھی شاید اتنے تکلیف دہ نہ ہوتے ہونگے جتنا یہ تضحیک و توہین پیغمبرِ وقت کی... فنا ہوجاتے ہیں رسولوں کامذاق اڑانے والے .. یہ میرے رب کا فرمان ہے..کچھ عرصہ کی مہلت اگر مل رہی ہے تو اسے چھوٹ نہ سمجھے کوئ نادان .. یہ تو بس ڈھیل ہے جو واحد القہار کی حکمت عملی ہے اور کچھ نہیں.

یا اہل الکفر !!! تم اپنی چال چل چکے اب اللہ کی تدبیر چلنے کو ہے .. جس نور کو توہین و تضحیک کی پھونکوں سے بجھانا چاہتے ہو وہ مکمل ہوکررہےگا ... چاہے عالم کفر کو کتنا ہی ناگوار ہو.. کتنی ہی جنگیں مسلط کرو .. کتنے ہی لشکر جمع کرلو .. اس نور اسلام کی تیزی سے پھیلتی روشنی سے ہی حواس باختہ ہوکر یہ اوچھے ہتھکنڈے استعمال کررہے ہو.. یہی راستہ تمہاری تباہی کی منزل تک جائے گا .. منتظر رہو .. ہم بھی منتظر ہیں..

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */