مچھلی، خدا کی عطا کردہ نعمت - بشریٰ نواز

جہاں اللہ تعالی نے انسان کے لیے بے شمار نعمتیں عطا فرمائی ہیں جسمانی نعمتوں کے علاوہ قدرت نے ہمیں بیرونی نعمتیں بھی عطا  فرمائی ہیں جن میں پھل سبزیاں اور کئی اقسام کے گوشت شامل ہیں. کئی جانور مسلمانوں کے لیے حلال کیے گئے ہیں جیسے اونٹ، بھیڑ، بکریاں، مرغی،گائے اور مچھلی. ہر گوشت کی افادیت اپنی جگہ ہے لیکن کئی سالوں کی تحقیق سے یہ بات واضح ہوئی ہےکہ مچھلی دل کی صحت کے لیے بہت مفید ہے. مچھلی میں چکنائی کی مقدار کم ہوتی ہے اور مچھلی کھانے والے انسان کو امراض قلب کا امکان کم ہوجاتا ہے. مچھلی کھانے سے کولیسٹرول لیول پر آجاتا ہے اور خون میں کلاٹس بننے کے امکانات کم رہ جاتے ہیں.

ہفتے میں ایک دن مچھلی کھانے سے کئی امراض سے چھٹکارا مل سکتا ہے، لیکن اس کے لیے ضروری ہے کہ بیرونی چکنائیوں سے پرہیز کیا جائے. جدید تحقیق کے مطابق شوگر کے مریضوں کے گردے  مچھلی کھانے سے بہتر ہوسکتے ہیں. مچھلی میں موجود امیگا 3 فیٹی ایسڈ دل کی بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے. یہ مفید فیٹی ایسڈ شریانوں کو مضر صحت چکنائیوں سے دور رکھتا ہے، جس کی وجہ سے دل کے دورے کے امکانات کم ہوجاتے ہیں. مچھلی کا تیل بڑھاپے میں آنکھوں کے امراض کے لیے بہترین ہے.

طبی ماہرین کے مطابق مچھلی کے تیل میں موجود امیگا تھری فیٹی ایسڈ آنکھوں کے امراض ختم کرنے میں مدد دیتا ہے. مچھلی کا باقاعدہ استعمال کینسر جیسے مرض سے بھی محفوظ رکھنے میں مدد دیتا ہے. سالمن مچھلی صحت بخش چکنائی کی قسم DHA پائی جاتی ہے جو لوگ کم خوابی کا شکار ہوں، ان کے لیے (Melatonin) کا اخراج بڑھا دیتا ہے جس سے اچھی نیند آنے لگتی ہے اور بے خوابی کا خاتمہ ہو جا تا ہے. ڈی ایچ اے Docosahexaenoic ایسڈ کا محفف ہے، ڈی ایچ اے کے علاوہ مچھلی میں EPA جو Eicosapentaenoic ایسڈ کا محفف ہے یہ دونوں چکنائیاں امیگا تھری سے تعلق رکھتی ہیں جو بہت سی بیماریوں کے لیے ڈھال ہے.

مچھلی اور دودھ کے بارے میں بہت سی باتیں عام ہیں جن میں ایک بات یہ ہے کہ مچھلی کھانے کے بعد  دودھ پینے سے برص کا مرض لاحق ہوجاتا ہے لیکن سائنس سے یہ بات ثابت نہیں ہوئی. ہوسکتا ہے کہ مچھلی کی کوئی قسم ہو ایسی جسے کھانے کے بعد دودھ پینے سے برص کاعارضہ لاحق ہو لیکن ابھی تک اس قسم کی مچھلی کو دریافت نہیں کیا جاسکا. کہا جاتا ہے کہ انگریزی کلینڈر کے جس مہینے میں" r" یا "ر" نا ہو اس مہینے میں مچھلی نا کھائی جائے جیسے مئی جون جولائی اور اگست. ان کے علاوہ تمام مہینوں میں مچھلی کھائی جاسکتی ہے. اس کی وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے کہ یہ مہینے مچھلیوں کی افزائش کے ہوتے ہیں اور اس دوران مچھلی کھانے سے اس کی افزائش متاثر ہوتی ہے. مچھلی کھائیں مگر اعتدال کے ساتھ.

مچھلِی کا ذکر قرآن پاک میں بھی ہے اور ہمارے پیارے نبی مچھلی کا گوشت پسند کرتے تھے. مچھلی سردیوں کی سوغات ہے. صحت اور توانائی کا خرانہ ہے. اس سے مختلف سالن اور سوپ بنائے جاتے ہیں، غرض جیسے مرضی کھائیں.

ٹیگز
WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */