سب سے پہلے پاکستان - خالد ایم خان

سب سے پہلے پاکستان ،، یقینا سب سے پہلے پاکستان کیوں کہ یہ ہمارا ایمان ہے ،یہ ہمارا غرور ہے ،یہ ہم سب کے دلوں میں بستا ہے ، کافی سال پہلے میں نے ایک کالم لکھا تھا جس میں میں نے اس ملک کی عوام کو ایک سوال پوچھا تھا کہ بتائیں پاکستان کا مطلب کیا ہے ،تو سب نے کہا لا الہ ال لاہ تو میں نے اُن سے پوچھا کہ کیسے ، ،،اوریہ بھی پوچھا تھا کہ پاک کیسے ، پاک کا مطلب کیا ہے کیا پاک کا مطلب لوٹو ، کھسوٹو اور ملک خدا داد پاکستان کی آنچ سے کھیلنا لکھا ہے آپ لوگوں کے دماغوں میں ،کیا پاک کا مطلب آپ لوگوں نے یہ سوچ لیا ہے کہ اس ملک کے دشمنان خاص کر مودی ، ٹرمپ، نتن یاہو اور بن سلمان کے ساتھ مل کر تباہ کرنا ہے ۔

افسوس کے ساتھ کہنا چاہتا ہوں کہ اس ملک کے وہ لوگ وہ سیاست دان جنہوں نے اس ملک میں تین تین بار حکومتیں کیں جنہوں نے پچاس سال سے اس ملک کی غریب عوام کی دولت کو بے دریغ اپنے ابا جان کی دولت سمجھ کر لوٹا آج اس ملک کی عوام کے سامنے پارسا بننے کی ناکام کوششوں میں جُتے دکھائی دے رہے ہیں ان سب کو ایک ایک جگہ بٹھا کر پوچھیں کہ باتائیں آپ لوگ کہ پاکستان کا مطلب کیا ہے ، یقین جانیں ان میں سے کوئی ایک بھی آپ کو جواب نہیں دے پائے گا کیوں کہ میرے اللہ کا فرمان مبارک ہے کلام پاک میں کہ ،، یہ لوگ جو اپنے آپ کو اپنے تئیں بہت زیادہ ہوشیار اور عقل مند تصور کرتے ہیں میں نے ان کی عقلوں پر پردہ ہائل کردیا ہے ،ان کی عقلوں کو ماؤفکر دیا ہے یہ سمجھ کر بھی نہیں سمجھ پائیں گے ،،آپ یقین جانیں ان کی شکلیں دیکھیں یہ نہیں سمجھ پائیں گے لیکن آپ ان کی شکلیں دیکھ کر ان کو ضرورسمجھ جائیں گے، یہ منافقوں کا وہ ٹولا ہے جو اس ملک کا کھا کر اس ملک کے ساتھ خداری پہ تُلے بیٹھے ہیں ،اللہ اللہ ،،انہوں نے تو مودی کی زبان بیان کی ہے سب مل گئے ہیں مودی اور افغانی ایجنسیوں سے اور ان سب نے اُن سے مل کر بلوچستان کی آزادی کا نعرہ لگایا ،خالستان کا نعرہ کیوں نہیں لگاتے آپ لوگ اور تیس سال تک کشمیر کمیٹی کا چیئرمیں رہنے والے فضل الرحمان نے کیوں نہیں نعرہ لگایا کشمیر کی آزادی کا ، خالستاں کی آزادی کا ، اور دیگر ہندوستانی ازادی کی تہریکوں کا ۔سن لیں آپ سب لوگ کہ پاک کا مطلب ہے پہلا کلمہ طیب اور طیب معنے پاک ۔

میاں اور اُس کی بیٹی کے ساتھ ساتھ اچک زئی اور فضل ارحمان کا بیانیہ ظاہر کر رہا ہے کہ کہیں پاکستان کو بھی اندرونی وبیرونی سازشوں کا شکار تو نہیں بنایا جا رہا ،ہمیں الجھایا جا رہا ہے ، گھیرلینے کی کوشش کی جا رہی ہے ،ہمارے چاروں طرف دشمن بھیڑیوں کے روپ میں ہمیں نوچ گھسوٹ لینے کے لئے تیار ہیں ، یہود وہنود ونصاری کے ایجنٹ کسی نہ کسی وفد کی صورت کوئی نہ کوئی نئی اسکیم لے کر آن وارد ہوتے ہیں ،نت نئے چارے ہمارے سامنے ڈالے جا رہے ہیں ،ہمیں پھنسانے کی نئی نئی سازشیں اغیار کے محلات میں تیار کی جارہی ہیں اور ہم ہیں اپنے اندرونی خلفشاروں میں اُلجھے ہوئے ہیں ،اب ہم مزید ان خلفشاروں کے متحمل نہیں ہوسکتے ،ہمیں اپنے ان اندرونی مسائل سے اب ہر صورت جان چھڑانی ہوگی ،اگر اس دنیا کے اندر عظیم پاکستانی قوم کے طور پر زندہ رہنا ہے تو پھرہمیں اپنے اپنے دلوں پر پتھر رکھ کر فیصلہ کرنا ہوگا کہ کیا ہم ایسی جمہوریت کے متحمل ہو سکتے ہیں کہ جس جمہوریت نے 50سالوں میں ہمیں سوائے دکھوں اور دنیا کے اندر رسوائی کے سوا کچھ نہ دیا ، یا پھر ایسی جمہوریت ہو جس میں حکمران بھی عوام کے سامنے جوابدہ ہو،دوسری جانب اس ملک کا میڈیا اپنی ہوش ربا کہانیوں سے باہر نکل کر نہیں دیکھ رہا ہر ایک اپنی ایک نئی فلاسفی کے ساتھ دکھائی دے رہا ہے چوہداری تو چوہدی ہے اس کے بارے میں کیا لکھوں حامد میر ،سلیم صافی اور دیگر میڈیا ہاؤسس بھائی آپ لوگوں کا قبلہ کہاں ہے اور آپ لوگ کس سمت میں بھاگ رہے ہو ،آپ لوگ بڑے استاد ہو آپ لوگوں کے بارے میں کیا کہوں آپ لوگوں نے نے تو اپنے سینوں پر بورڈ لکھائے ہوے ہیں کہ مینوں نوٹ دکھا میرا موڈ بنے ۔کیا کبھی کسی نے ان سے بھی پوچھا ہے کہ تمھاری پے اسکیل کیا ہے اور تم لوگ ماہانہ کتنی تنخواھ لیتے ہو اور جس میڈیا پر تم براجمان ہو وہ میڈیا ہاؤس کتنا ٹیکس اڈا کیا ہے اس ملک کو اور کر رہے ہو ۔کیا اس ملک میں سب یہی کھیل ہے کہ سب وہ لوگ جن کو ڈر ہے اپنی چوربازاری کا اکٹھے ہو رہے ہیں حکومت کے خلاف ۔

اب سورج سوا نیزے پر آگیا ہے اپنے لئے سائبان ڈھونڈ سکتے ہیں تو ڈھونڈ لیں،کڑی تیز دھوپ بس ہمیں جھلسانے کو ہے،ہمیں خود کو بحیثیت قوم آنے والے کڑے دنوں اور آنے والی آزمائشوں کے لئے تیار کرنا ہوگا ،ہم تمام دشمنوں کی ہٹ لسٹ پر روز اول ہی سے اول پوزیشن پر براجمان ہیں،ہمیں خود کو بدلنا ہوگا اپنا انداز بدلنا ہوگا ، ہمیں خود کو دنیا کے ساتھ چلنے کے لئے تیار کرنا ہوگا ، خدا کے لئے اپنا قبلہ درست کرلیں ،اور عمران خان کو کام کرنے دیں ،اگر وہ کامیاب ہو گئے تو ہم سب لوگ دنیا کی اس غلامی سے خود کو باہر نکال لانے میں کامیاب ہو جائیں گے ،انشاء اللہ ۔اس کے لیئے زروری ہے کہ اس ملک کے ہر نوجوان پر حکومت کی طرف سے عسکری تربیت لازم قرار دی جائے کیوں کہ آنے والے وقت میں ہمیں خود کو دنیا کے اندر ثابت کرنا ہے ،اس کے علاوہ آپ لوگ یقین جانیں کہ ہمیں کڑی محنت کرنی ہوگی خود کو بہت بہتر اور مضبوط بنانا ہوگا کیوں کہ اس جنگل (دنیا) میں وہی زندہ رہ پائے گا جس کے اندر اس جنگل کے خونخوار درندوں کا سامنا کرنے کا حوصلہ ہوگا،اب ہمیں خود کو ان سفاک بھیڑیوں کے خلاف لڑنے کے لئے بھی تیار کرنا ہوگا ہے۔۔ ،اور یاد رکھنا یہی وہ ملک عظیم ہے جس سے اللہ نے وہ کام لینا ہے جس کا شائد کسی نے خواب میں بھی نہ سوچا ہوگا ،ہند کے میدانوں سے لے کر شام کے پہاڑوں تک اسی ارض وطن کے گیت گائے جائیں گے ،اور یہ سب کچھ اللہ تبارک وتعالیٰ دکھا رہا ہے،دیکھ لیں فلسطینی بھی پاکستان زندہ باد کا نعرہ بلند کرتا ہے تو کشمیری بھی ہندو افواج کو پاکستان زندہ باد کہہ کر للکارتا ہے ،اسی لئے تو کہتا ہوں کہ سب سے پہلے پاکستان ۔

میرے تن کے زخم نہ گن ابھی

میری آنکھ میں ابھی نور ہے

میرے بازوؤں پہ نگا ہ ک ر

جو غرور تھا سو غرور ہے

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */