پناہ گاہ کا منفرد آئیڈیا - جویریہ ساجد

سٹریس مینیجمنٹ، پارٹ 2
________________

میں ہرگز بھی کوئی نفسیات دان نہیں، آپ سب سے صرف وہ چیزیں شیئر کررہی ہوں جو میں نے اپنے سٹریس مینیجمنٹ کے لیے خود آزمائیں اور عارف انیس صاحب کے لیکچرز پڑھ کے یہ جانا کہ چھوٹی چھوٹی ٹیکنیکس کس قدر کار آمد اور تیر بہدف نسخہ ہیں۔

مثلا سب سے پہلے تو یہ بات ذہن نشین کرلیں کہ سٹریس ہونا کوئی بری بات نہیں جیسا کہ عارف انیس صاحب سے ہم نے سیکھا کہ سٹریس تو خود ایک بہت بڑی موٹیویشن ہے. یہ سٹریس ہی ہے جو ہمیں‌صبح جلدی جگاتا ہے. محنت کرواتا ہے. پلیننگ کرواتا ہے۔

کرنے کا کام یہ ہے کہ اس سٹریس میں سے مثبت اثر لے کے ایکسٹرا کو دور بھگا دینا ہے. اس کو خود پہ طاری نہیں‌ہونے دینا.

اس کے لیے میں نے جو فارمولے لگائے ان میں سے ایک پناہ گاہ کا فارمولہ ہے. سٹریس میں سے انرجی لے لی، کرنے کے کام کر لیے ، جو نہیں ھو سکتے جن پہ اختیار نہیں لیکن وہ مسلسل سٹریس دے رہے ہیں، لیکن ہاتھ بندھے ہیں تو ان کے لیے خواب دیکھیں. جی ہاں! جاگتے میں خواب۔

یہ خواب ہماری بہت بڑی پناہ گاہ ہوتے ہیں. حالات اچھے ہونے کے خواب خود کو کامیاب دیکھنے کے خواب۔

مثلا میں جاب کرتی تھی. میرا باس شدید بے قدرا شخص تھا یا یہ کہہ لیں کہ یہ اس کا سٹائل تھا کہ کسی سے خوش نہیں ھونا. کسی کام کی حوصلہ افزائی نہیں کرنی. بلکہ ہر کام میں کیڑے نکالنے ہیں. ورکرز کو گھاس نہیں ڈالنی. ادارے کے لیے ہمیشہ چونکا دینے والی پالیسیز بنانی ہیں اور ورکرز کی بے چینی سے لطف لینا ہے. وغیرہ

اب میں نے اس شخصیت کا تجزیہ کرلیا. رویہ اور اس میں چھپی نفسیات جان لی اور کوئی بھی اسائنمنٹ لے جانے سے پہلے دل ہی دل میں سارے ری ایکشنز سوچ کے ان کے مزاحیہ جواب بھی تیار کرلیے. وقتی طور پہ تو سٹریس کو ریزسٹ کرلیا لیکن پالیسیوں کے سٹریس سے نمٹنا اتنا بھی آسان نہیں۔

اس کے لیے میں نے کیا کیا کہ میرا ایک کمفرٹ زون ہے. میں جیسے ہی کاموں سی فری ہوئی، اس پناہ گاہ میں چلی گئی. میرے جاگتی انکھوں خواب شروع ہوگئے. اب میں ادارے کا ہیڈ ہوں. میرا روم کیسا سیٹ ہوگا؟ میری ڈریسنگ کیسی ہوگی سے لے کر میرا رویہ اپنے ورکرز کے ساتھ کیسا ہوگا؟ اور میری پالیسی ادارے کو چلانے کے بارے میں کیا ہوگی؟ ایک ایک چیز کی ڈیٹیل ویولائزیشن visualization شروع ہوگئی. جیسے ہی میں‌اپنے پناہ گاہ میں گئی، سٹریس غائب ہوگیا. خاص طور پہ رات کو سونے سے پہلے سنہرے روپہلے خواب ہماری ایسی پناہ گاہ ہوتے ہیں جو سٹریس کو قریب بھی نہیں پھٹکنے دیتے.

یہ طریقہ نہ صرف سٹریس بھگاتا بلکہ ادارے کا سربراہ بننے کے لیے ہماری تیاری بھی کرواتا ہے. ہمارے اندر صلاحیتیں بھی پیدا کرتا ہے. ہمارے پاس ہمیشہ پلانز موجود ہوتے ہیں. آئیڈیاز موجود ہوتے ہیں. کیونکہ خواب موجود ہوتے ہیں۔
اس لیے سٹریس سے بچنے کے لیے پناہ گاہ کا طریقہ ضرور آزمائیں۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */